اسلامک

امام مہدی کی غیبت – ہمارے طرز عمل اور ذمہ داریاں.. پوسٹ ٣

امام مہدی کی غیبت – ہمارے طرز عمل اور ذمہ داریاں.. پوسٹ ٣ —————————————- احمد ابن حوزہ ، جو ابن حراسه بہلی سے ، جو ابراہیم ابن اسحاق نہونڈی سے ، جو عبد اللہ ابن حماد انصاری سے ، جو صباح مزنی کی سے ، جو حارث ابن حوثیر سے ، جو ابن نباطہ سے ، جوکہتے ہیں: میں نے امیر المومنین ص کو فرماتے سنا۔ : تم لوگوں میں ایسا برتاؤ کرنا شروع کرو جیسے شہد کی مکھی پرندوں میں کرتی ہے ، جیسا کہ تمام پرندے اسے حقیر (جہالت کی بناء پر) سمجھتے ہیں ، تاہم ، اگر وہ ان خزانوں کا ادراک کریں گے جو اس کے پیٹ میں پوشیدہ ہیں ، تو وہ اسے کمزور اور بیکار نہیں سمجھیں گے۔ آپ اپنی زبان اور جسم کو شامل کرتے ہوئے لوگوں سے مل جائیں لیکن اپنے دلوں اور اعمال سے ان سے دور رہیں۔ قسم اسکی جسکے قبضہ قدرت میں میری جان ہے، تم ان (امام عج) کو نہیں دیکھ پاؤ گے(امام ص کی حکومت کا قیام) جب تک کہ آپ کے معاملات اس حالت تک نہ پہنچ جائیں جب تک کہ آپ ایک دوسرے کے منہ پر تھوکتے لگو ، ایک دوسرے کو جھوٹا سمجھنے لگو ، اور اتنے چھوٹے ہو جاتے ہو جیسے آٹا میں نمک ہے یا آنکھوں میں کوہل ۔ میں ص تمہیں ایک مثال سے سمجھاتا ہوں : ایک ایسے شخص پر غور کرو جو اپنے اناج کے ذخیرے میں چھاننے اور صاف کرنے کے بعد اناج کو محفوظ طریقے سے محفوظ کرتا ہے۔ اناج کو کچھ وقت کے لئے رکھا جاتا ہے لیکن جب وہ اس کا تجزیہ کرتا ہے تو اسے اس میں کیڑے مل جاتے ہیں اور وہ صفائی ستھرائی کا عمل دوبارہ شروع کرتا ہے اور کیڑوں اور فضلہ کو نکالنے کے بعد وہ صاف ستھرا (کیڑے سے پاک) دانے محفوظ کرتا ہے۔ لیکن کچھ عرصے کے بعد ، وہ دوبارہ ذخیرہ میں اپنے دانوں کا معائنہ کرتا ہے اور اس میں کیڑوں کو خراب کرتے ہوئے پایا جاتا ہے ، وہ اس عمل کو کئی بار دہراتا ہے یہاں تک کہ اس کے اناج کا ذخیرہ ایک چھوٹے سے تھیلے تک کم ہوجائے جو متعدی مرض(اڑ کر لگنے والا مرض، چھوت کی بیماری) سے پاک ہو۔ اسی طرح آپ (شیعوں) کو آزمایا جائے گا (بدعتوں / فتنوں کے ساتھ) اور بار بار ان کی آزمائش کی جائے گی یہاں تک کہ آپ میں سے بہت کم لوگ (سیدھے راستے پر) باقی رہیں گے اور وہ خالص ہیں جو تب (تباہی سے) محفوظ رہیں گے ‘فتنہ’ (تنازعہ) سے. —————————————- —————————————- ————————————–

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published.

Back to top button