BUSINESS

پائی کرپٹو کرنسی سچ ہے یا بکواس؟ کیا ہم اس سے ڈالر کما سکتے ھیں (محمد عامر سہیل)

آج سے بارہ سال پہلے، 2009 میں “بی ٹی سی” کرپٹو کرنسی نے بھی اپنی کرنسی کو سٹارٹ کیا تھا اور اس کا اس وقت ریٹ 0.003 ڈالر تھا مطلب ایک “بی ٹی سی” سے آدھا روپیہ حاصل ہوتا تھا۔شروع میں اس کو بھی کچھ مہینے مفت میں دیا گیا تھا لیکن وقت گزرنے کے ساتھ ساتھ اس کا استعمال بڑھتا گیا اور اب ایک “بی ٹی سی” کا ریٹ11997 ڈالر ہے مطلب پاکستانی 20 لاکھ روپے۔

اسی طرح اب پائی کرپٹو کرنسی نے بھی اپنی کرنسی متعارف کرائی ہے جس کو مارچ 2021 تک مکمل طور پر شروع کر دیا جائے گا۔اس سے پہلے پائی کرپٹو کرنسی کی کمپنی اس کو مارچ 2021 تک اس کو مفت میں تقسیم کر رہی ہے۔اور کمپنی کے اندازے کے مطابق جب پائی کرپٹو کرنسی کو لانچ کیا جائے گا اس کا کم سے کم ریٹ 5 سے 10 دس ڈالر ہو گا جو کہ ایک کرپٹو کرنسی کے پاکستانی 800 سے 1600 روپے بنتے ہیں اور ابھی دن میں ایک سے زائد کرپٹو کرنسی کوائن ملتے ہیں مطلب ایک دن کے ایک کرپٹو کرنسی کے 800 سے 1000 روپے مل سکتے ہیں۔۔۔ ابھی میں نے ایک ڈالر کا ریٹ پاکستانی 160 روپے کے حساب سے لگایا ہے۔ڈالر کا ریٹ بڑھ ہی رہا ہے۔

تو آپ بھی اس کو پلے سٹور سے ڈاؤن لوڈ کریں اور مفت میں پائی کرپٹو کرنسی کے کوائن حاصل کریں۔پائی ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے درج ذیل لنک پر جائیں۔اور ریفرل کوڈ میںamirsohail76b لکھیں۔
http://minepi.com/amirsohail76b

اور ہاں اس میں کچھ دوست بہت بڑی غلطی کرتے ہیں وہ ریفرل کوڈ کی جگہ اپنی طرف سے کچھ نہ کچھ اور لکھ دیتے ہیں جو کہ ایپ اس کو غلط کر دیتی ہے اور اس کے بدلے کچھ بھی نہیں ملتا۔بس آپ کو ریفل کوڈ میں یہ کوڈ لازمی دینا ہو گا amirsohail76b ورنہ آپ کو نقصان اٹھانا پڑے گا مطلب کچھ بھی نہ ملنے کے امکان ہیں۔اگر آپ مارچ تک 40 سے 50 کرپٹو کرنسی بھی اکھٹے کرتے ہیں تو آپ کو 32000 سے 40000 روپے ملیں گے

میں اس کو پچھلے تقریباً چار مہینوں سے استعمال کر رہا ہوں اور میں نے اس سے 152 کرپٹو کرنسی حاصل کر لیے ہیں۔۔اب اپنا فیصلہ خود کریں۔۔آزما کر ضرور دیکھیں فائدہ نہ ہوا تو نقصان بھی نہیں ہو گا۔ اگر آپ کو یہ جھوٹ لگ رہا ہے تو آپ گوگل سے بھی اس کی معلومات لے سکتے ہیں۔مزید معلومات کے لیے ہمارے فیس بک پیج کو دیکھیے۔

Facebook Page: AforAmir Vlog

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published.

Check Also
Close
Back to top button