وائرل نیوز

وہ شخص جس نے 28 کروڑ ڈالرز کچرے میں پھینک دئیے

کروڑوں ڈالر مالیت کی بٹ کوائن والی ہارڈ ڈرائیو کی تلاش کی در خواست مسترد کر دی گئی ۔ برطانوی شہری نے 28 کروڑ ڈالرز کے بٹ کوائن والی ہارڈ ڈرائیو حادثاتی طور پرکچرے کے ڈھیر میں پھینک دی-اس نے حکام سے گمشدہ ہارڈ ڈرائیو ڈھونڈ نے کی اجازت طلب کی ہے ۔ برطانوی رپورٹ کے مطابق تاہم حکام ایسا کرنے کے لیے تیار نہیں ۔ میڈیا پورٹ کے مطابق نیوپورٹ ویلز سے تعلق رکھنے والے 35 سالہ آئی ٹی انجینئر جیمز بویلز نے 2009 میں کرپٹو کرنسی میں حصہ لیا تھا اور 2013 میں آفس کی صفائی کے دوران غلطی سے بٹ کوائن والی ہارڈ ڈرائیو کچرے میں پھینک دی تھی ۔

جیمز بویلز کا کہنا ہے کہ اس کے پاس 7500 بٹ کوائنز موجود تھے- جوموجودہ کرنسی کے مطابق 28 کروڑ ڈالرز بنتے ہیں ۔ جیمز ہویلز کا کہنا ہے کہ اسکے پاس دو ایک جیسی ہارڈ ڈرائیوز تھیں -جس کی وجہ سے اس نے غلطی سے اس ہارڈ ڈرائیوکو کچرے میں پھینک دیا۔ یادر ہے کہ حالیہ برسوں میں بٹ کوائن کی قیمت میں تیزی سےاضافہ ہوا ہے -حالانکہ جب جیمز بویلز نےاس میں حصہ لیا تھا تب یہ بالکل بے فائدہ تھی- لیکن پچھلے چند سالوں کے دوران بٹ کوائن کی قیمت بڑھنے کی شرح میں 400 فیصد تک اضافہ ہوا ہے ۔

اسے یقین ہے کہ اتنے سالوں کے بعد بھی وہ بٹ کوائن والی ہارڈ ڈرائیوکوریکور کر سکتا ہے مگر سٹی کونسل نے اب تک اسے کوڑے کے ڈھیر میں ہارڈ ڈرائیو تلاش کرنے کی اجازت نہیں دی ہے ۔ یہاں تک کہ 35 سالہ جیمز بویلہز نے کرپٹو کرنسی سے ملنے والی رقم کا 25 فیصد حصہ شہر کے لیے عطیہ کرنے کی پیشکش بھی کی ہےلیکن کوئی فائدہ نہیں ہوا۔ کونسل کی جانب سے کوڑے کے ڈھیر میں ہارڈ ڈرائیو تلاش کرنے کی بار با در خواستوں کو مسترد کر دیا گیاہے ۔

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button
error: Content is protected !!