تعلیم

The world’s advice

دنیا کا نصیحت نامہ

پچھلی دو صدیوں میں دنیا بہت سی تبدیلیوں سے گزر چکی ہے۔ طاقتور سلطنتیں کئی قوموں میں تقسیم ہو چکی ہیں ، ہماری قوم پاکستان بھی اس تبدیلی کا نتیجہ تھی۔ لیکن موجودہ دور میں اخلاقی اقدار ختم ہو رہی ہیں اور آنے والے مستقبل میں اخلاقیات کے وجود کی کوئی ضمانت نہیں ہے۔ ہم ہر روز ظلم اور بربریت کا ایک نیا قصہ سنتے ہیں اور اپنی آنکھیں اور کان بند کرتے لیتے ہیں اور اپنا چہرہ ان واقعات سےموڑ لیتے ہیں۔لیکن ہم ایسے واقعات کی وجہ پر توجہ نہیں دیتے۔

ہمیں اپنی غلطیوں سے سیکھنے کی ضرورت ہے تاکہ مستقبل میں ایسے واقعات منظر عام پر نہ آئیں۔ سب سے پہلے والدین کو اپنے بچے کی اخلاقی تعلیم پر دھیان دینا ہوگا اور اسے سکھانا ہوگا کہ معاشرے کے دوسرے لوگوں کا احترام کیسے کریں۔ اگر ہم تبدیلی لانا چاہتے ہیں تو ہمیں خود سے شروع کرنا ہوگا ، ہمیں صحیح راستہ اختیار کرنا چاہیے تاکہ ہم ان کے لیے اور آنے والی نسل کے لیے مثال بن سکیں۔حکومت کو مجرموں کو سزائے دے کر سماج کی اصلاح میں بھی اہم کردار ادا کرنا چاہیے تاکہ دوسرے لوگوں کو مزید جرایم کرنے کی ترغیب نہ ملے۔ حکومت کو چاہیے کہ وہ لوگوں کو سیکورٹی بھی فراہم کرے تاکہ لوگ کرسکوں زندگی گزار سکے۔ ہماری کمیونٹی کے لیے سب سے بڑا خطرہ مغربی ثقافت کا حملہ ہے، ہماری کمیونٹی میں ہمیں اپنی ثقافت اور اقدار کو اپنانا چاھیے اوراسے فروغ دینا چاہیے۔

ہمیں سخت محنت کرنے کی ضرورت ہے اور دوسری قوموں کے درمیان ایک باعزت مقام حاصل کرنے کی ضرورت ہے۔ ہمیں اپنے فرائض کے ساتھ ایماندار رہنا ہوگا اور پاکستان کو پھلنا پھولنا ہوگا۔ ہمیں یہ پیغام میڈیا کے ذریعے پھیلانے کی ضرورت ہے تاکہ لوگ اپنے مستقبل کے بارے میں فکر مند رہیں ، تاکہ وہ ایک بڑے پاکستان کے لیے کام کریں۔ ہمیں لوگوں میں مثبت سوچ پھیلانے کی ضرورت ہے تاکہ وہ اپنے مستقبل کے بارے میں پرامید ہوں۔یہ وہ پاکستان تھا جس کا علامہ اقبال نے خواب دیکھا تھا۔ ہمیں اپنی نسل کے لیے اس کمیونٹی کو بدلنا ہے تاکہ انہیں ان چیلنجوں کا سامنا نہ کرنا پڑے جن کا ہم آج سامنا کر رہے ہیں ، ہمیں ان کے لیے ایک پھلتی پھولتی اور خوشحال قوم چھوڑنی چاہیے تاکہ وہ دوسری قوموں سے پیچھے نہ رہی, مجھے صرف اتنا کہنا ہے ، اب یہ آپ پر منحصر ہے کہ آپ اسی راستے کو تبدیل کریں یا رکھیں

 

Translated in English:

The world’s advice

The world has undergone many changes in the last two centuries. Powerful empires have been divided into many nations, our nation Pakistan was also the result of this change. But in the present age, moral values ​​are disappearing and there is no guarantee of the existence of morality in the future. Every day we hear a new story of oppression and barbarism and close our eyes and ears and turn our face away from these incidents. But we do not pay attention to the cause of such incidents.

We need to learn from our mistakes so that such incidents do not come to light in the future. First of all, parents need to pay attention to their child’s moral education and teach him how to respect other people in the society. If we want to bring change, we have to start from ourselves, we have to take the right path so that we can be an example for them and the next generation. The government also plays an important role in reforming society by punishing the criminals Should be done so that other people are not encouraged to commit more crimes. The government should also provide security to the people so that they can live. The biggest threat to our community is the invasion of Western culture. In our community, we must adopt and promote our culture and values.

We need to work hard and gain a respectable place among other nations. We have to be honest with our duties and make Pakistan prosperous. We need to spread this message through the media so that people are worried about their future, so that they can work for a bigger Pakistan. We need to spread positive thinking among the people so that they are optimistic about their future. This was the Pakistan that Allama Iqbal dreamed of. We have to change this community for our generation so that they do not face the challenges we are facing today, we must leave them a prosperous and prosperous nation so that it does not lag behind other nations, I Suffice it to say, it is now up to you to change or keep the same path

Hello,I am a student.I want to become a writter. I will receive experience at this platform

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button
error: Content is protected !!