Personal Growth

The 10 Richest People in the World

دنیا کے 10 امیر ترین لوگ۔

As of 2021, there are reportedly 2,755 billionaires on Earth, with an estimated total net worth of $13.1 trillion. Of this amount, the highest 10 wealthiest people within the world account for $1,153 billion, or roughly 8.8%, which is impressive once you consider that they represent around 0.36% of billionaires.

Below are the ten individuals currently considered the wealthiest at the time of updating this text.

1. Jeff Bezos
Age: 57
Residence: Seattle
Founder and Executive Chair: Amazon (AMZN)
Net Worth: $177 billion
Amazon Ownership Stake: 11% ($178 billion)
Other Assets: Blue Origin ($7.15 billion private assets), The Washington Post ($250 million private assets), and $13.4 billion in cash

In 1994, Jeff Bezos founded Amazon.com in a very garage in Seattle, shortly after he resigned from the hedge fund giant D.E. Shaw. In fact, he had originally pitched the thought of a web bookstore to his former boss David E. Shaw, who wasn’t interested.

Though Amazon.com originally started off selling books, it’s since morphed into a one-stop-shop for everything under the sun, and is arguably the world’s largest retailer. At any rate, it’s hard to dispute its self-description because the “Earth’s most customer-centric company.” Its pattern of constant diversification is obvious in a number of its unexpected expansions, which include acquiring Whole Foods in 2017 and launching its own branded over-the-counter drugs in Aug.

In 2020, Amazon’s share price skyrocketed on the heightened demand for online shopping as lockdowns forced consumers to remain home. On July 5, 2021, Bezos stepped down as CEO of the e-commerce giant and transitioned to his new role as its executive chair.

Bezos originally took Amazon public in 1997 and went on to become the primary man since entrepreneur in 1999 to attain a net worth of quite $100 billion. Bezos’s other projects include aerospace company Blue Origin; The Washington Post, which he purchased in 2013; and also the 10,000-year clock, also called the Long Now. On July 20, 2021, Bezos, his brother Mark, aviation pioneer Wally Funk, and Dutch student Oliver Daemen completed Blue Origin’s first successful crewed flight, reaching an altitude of just above 62 miles before landing safely.

2. Elon Musk
Age: 50
Residence: Austin, Texas
Co-founder and CEO: Tesla (TSLA)
Net Worth: $151 billion1
Tesla Ownership Stake: 20% ($125 billion)
Other Assets: Space Exploration Technologies ($29.8 billion private assets) and therefore the Boring Company ($101 million private assets)

Elon Musk has had his hands in several different companies over the years. Originally enrolled at university, Musk deferred his attendance to launch Zip2, one among the earliest online navigation services. a little of the proceeds from this endeavor was then reinvested to make X.com, a web payment system that later became PayPal. While both of those systems were eventually sold to other companies, Musk has maintained his status as CEO and lead designer of his third project, Space Exploration Technologies (SpaceX), which aims to create space exploration more cost-effective.

In 2004, Musk became a significant funder of Tesla Motors (now Tesla), which led to him being retroactively declared a cofounder and his current position as CEO of the electrical vehicle company.In addition to its line of electrical automobiles—which include sedans, car vehicles (SUVs), and also the “Cybertruck” announced in 2019—Tesla also produces energy storage devices, automobile accessories, merchandise, and, through its acquisition of SolarCity in 2016, solar energy systems.

In 2020, Tesla’s stock price experienced an astronomical surge, having risen 705% from the beginning of the year to mid-December. It joined the S&P 500 that very same month, the biggest company added to date.

In 2016, Musk founded two more companies, Neuralink and therefore the Boring Company, with him serving because the CEO of the previous. Neuralink is developing brain-machine interface devices to assist individuals tormented by paralysis and potentially allow users to mentally interact with their computers and mobile devices. The Boring Company, meanwhile, develops boring machines for the aim of drilling tunnels for underground public transportation systems, which might mitigate traffic congestion in major cities. It also (briefly) sold a handheld flamethrower.

3. Bernard Arnault
Age: 72
Residence: Paris
CEO and Chair: LVMH (LVMUY)
Net Worth: $150 billion1
Christian Dior Ownership Stake: 97.5% ($133 billion)
Other Assets: Moelis & Company equity ($23.3 billion public assets), Hermès equity ($2.23 billion public assets), Carrefour equity ($900 million public assets), and $9.48 billion in cash.

French national Bernard Arnault is that the chair and CEO of LVMH, the world’s largest luxury goods company. This business owns a number of the largest brands on Earth, including Louis Vuitton, Hennessey, Marc Jacobs, Sephora, and plenty of more. the bulk of his wealth, however, actually comes from his massive stake in clothes designer SE, the company that controls 41.25% of LVMH.His shares in Christian Dior SE, plus a further 6.2% in LVMH, are held through his family-owned company, Groupe Arnault SE.25

An engineer by training, Arnault’s business chops became apparent while working for his father’s construction firm, Ferret-Savinel, which he would take hold of in 1971. He later converted Ferret-Savinel to a true estate company named Férinel Inc. in 1979.

Arnault remained Férinel’s chair for one more six years, until he acquired and reorganized luxury goods maker Financière Agache in 1984, eventually selling all of its holdings apart from designer and Le Bon Marché. He was invited to speculate in LVMH in 1987 and have become the bulk shareholder, chair of the board, and CEO of the corporate two years later.

4. Bill Gates
Age: 65
Residence: Medina, Washington
Cofounder: Microsoft Corp. (MSFT)
Net Worth: $124 billion1
Microsoft Ownership Stake: 1.3% ($31.2 billion)
Other Assets: Republic Services equity ($13.5 billion public assets), john deere equity ($10 billion public assets), Canadian National Railway equity ($9.14 billion public assets), Ecolab equity ($6.92 billion public assets), Givaudan equity ($5.56 billion public assets), FEMSA equity ($2.42 billion public assets), Waste Management equity ($2.26 billion public assets), Berkshire Hathaway equity ($1.87 billion public assets), Diageo equity ($1.77 billion public assets), Sika AG equity ($1.5 billion public assets), Arch Capital Group equity ($1.42 billion public assets), AutoNation equity ($1.33 billion public assets), Liberty Global equity ($251 million public assets), Fomento de Construcciones y Contratas equity ($200 million public assets), Otter Tail Corporation equity ($190 million public assets), Western Asset Inflation-Linked Opportunities & Income Fund equity ($180 million public assets), Western Asset Inflation-Linked Income Fund ($69.9 million public assets), and $62.6 billion in cash

While attending Harvard University in 1975, Bill Gates visited work alongside his childhood friend Paul Allen to develop new software for the initial microcomputers. Following this project’s success, Gates dropped out of Harvard in his junior year and went on to found Microsoft with Allen.

In addition to being the most important software company within the world, Microsoft also produces its own line of private computers, publishes books through Microsoft Press, provides email services through its Exchange server, and sells game systems and associated peripheral devices. Originally Microsoft’s chief software architect, Gates later transitioned to the role of chair in 2008. He had joined Berkshire Hathaway’s board in 2004. He stepped down from both boards on March 13, 2020.

In 2000, Gates’s two philanthropic organizations—the William H. Gates Foundation and also the Gates Learning Foundation—were merged to make the Bill & Melinda Gates Foundation, of which he and his ex-wife, Melinda Gates, are co-chairs. Through the muse, he has spent billions to fight polio and malaria.Additionally, he pledged $50 million in 2014 to assist fight Ebola. As of 2021, the inspiration has spent over $1.8 billion to combat the COVID-19 pandemic.

In 2010, alongside Warren Buffett, enterpriser launched the Giving Pledge, a campaign encouraging rich individuals to attempt to donating the bulk of their wealth to philanthropic causes.

5. Mark Zuckerberg
Age: 37
Residence: Town, Calif.
Co-founder, CEO, and Chair: Facebook (FB)
Net Worth: $97 billion1
Facebook Ownership Stake: 13% ($138 billion)
Other Assets: $3.35 billion in cash and $225 million in assets

Mark Zuckerberg first developed Facebook alongside fellow students Eduardo Saverin, Dustin Moskovitz, and Chris Hughes while attending Harvard University in 2004. As Facebook began to be used at other universities, Zuckerberg dropped out of Harvard to focus entirely on his growing business. Today, Zuckerberg is that the CEO and chair of Facebook, which had quite 2.8 billion monthly active users as of Q1 2021

Facebook is that the world’s largest social networking service, enabling its users to make a private profile, connect with friends and family, join or create groups, and far more. because the website is liberal to use, most of the company’s revenue is generated through advertising.

Facebook (the company) is additionally host to many other brands, including photo-sharing app Instagram, which it acquired in 2012; cross-platform mobile messaging service WhatsApp and virtual-reality–headset producer Oculus, both acquired in 2014; Workplace, its enterprise-connectivity platform; Portal, its line of video-calling devices; and Novi, its digital wallet for the Diem payment system.

Zuckerberg and his wife, Priscilla Chan, founded the Chan Zuckerberg Initiative in 2015, with each of them serving as co-CEO. Their charity seeks to leverage technology to mend societal ills, like improving the access and quality of education, reforming both the criminal justice system and also the U.S. immigration system, improving housing affordability, and eventually eradicating all diseases.

6. Warren Buffett
Age: 91
Residence: Omaha, Nebraska
CEO: Berkshire Hathaway (BRK.A)
Net Worth: $96 billion1
Berkshire Hathaway Ownership Stake: 38.001% ($103 billion total)
Other Assets: Wells Fargo & Co. equity ($76.6 million public assets), U.S. Bancorp equity ($50.2 million public assets), Seritage Growth Properties equity ($38 million public assets), and $1.10 billion in cash.

The most famous living value investor, Warren Buffett filed his first return in 1944 at age 14, declaring his earnings from his boyhood paper route. He first bought shares in a very textile company called Berkshire Hathaway in 1962, becoming the bulk shareholder by 1965. He expanded the corporate to insurance and other investments in 1967. Now, Berkshire Hathaway may be a half-trillion-dollar company, with one share of stock trading at over $410,000 per share in mid-2021.

Widely called the “Oracle of Omaha,” Buffett made the bulk of his fortune through purchasing shares in companies with easy-to-understand business operations. While many investors are piling into tech companies, Buffett has opted for a more cautious approach, only buying from well-established companies that are easier to grasp, like IBM and Apple.He is also a noted Bitcoin skeptic. Additionally, Buffett has also outright purchased a lengthy list of companies over the years, including Dairy Queen, Duracell, GEICO, and Kraft Heinz.

Outside of investing, Buffett has directed much of his wealth toward philanthropic endeavors. Between 2006 and 2020, Buffett gave away $41 billion—the majority of which visited either the Bill & Melinda Gates Foundation or his children’s charities.

Buffett launched the Giving Pledge alongside William Henry Gates in 2010.

7. Larry Ellison
Age: 77
Residence: Lanai, Hawaii
Co-founder, CTO, and Chair: Oracle (ORCL)
Net Worth: $93 billion1
Oracle Ownership Stake: 35.4% ($74.3 billion)
Other Assets: Tesla equity ($11.1 billion public assets) and $16.6 billion in cash.
After dropping by the wayside of the University of Chicago in 1966, Larry Ellison moved to California and worked as a technologist for several companies over the years. First, in 1973, he was an employee of the company Ampex, where he met future partners Ed Oates and Bob Miner. Three years later, Ellison joined Precision Instruments, serving because the company’s vice chairman of research and development.

By 1977, Ellison had founded Software Development Laboratories (SDL) alongside Oates and Miner, which, two years later, released Oracle, the primary commercial electronic database program to utilize Structured source language. The database program proved so popular that SDL would change its name to Oracle Systems Corporation in 1982. Additionally, Ellison joined Tesla’s board in Dec. 2018.

Oracle is that the second-largest software company and provides a large form of cloud computing programs likewise as other software, like Java and Linux, and also the Oracle Exadata computing platform. The business has also grown through the acquisition of several major companies, including human resources management systems provider PeopleSoft in 2005, customer relationship management applications provider Siebel in 2006, enterprise infrastructure software provider BEA Systems in 2008, and hardware-and-software developer Sun Microsystems in 2009.

Ellison has spent millions in luxury realty over the last decade, predominantly in California. Likely his most impressive expenditure, Ellison bought nearly the complete Hawaiian island of Lanai for $300 million, building a hydroponic farm and luxury spa there. He has also donated countless dollars to charitable causes over the years, particularly to medical research. last, in 2016, Ellison gave $200 million to the University of Southern California for a brand new cancer centre.

8. Larry Page
Age: 48
Residence: Palo Alto, California
Co-founder and Board Member: Alphabet (GOOG)
Net Worth: $91.5 billion
Alphabet Ownership Stake: 6% ($115 billion total)
Other Assets: $13.8 billion in cash
Like several tech billionaires on this list, Larry Page’s claim to fame got its start in a very college dormitory room. While attending university in 1995, Page and his friend Sergey Brin came up with the concept of improving data extraction capabilities while accessing the net. The duo devised a brand new sort of computer program technology they dubbed “Backrub,” named after its ability to investigate “backing links.” From there, Page and Brin went on to found Google in 1998, with the previous serving as CEO of the corporate until he stepped down in 2001.

Google is one among the most important Internet search engines on the earth, accounting for quite 70% of worldwide online search requests. In 2006, Google (the company) expanded by purchasing YouTube, the most important platform for user-submitted videos. Then, 2008 saw the discharge of the primary transportable utilizing the Android package, which was originally developed by Android Inc. before Google acquiring the corporate in 2005. Today, Google could be a subsidiary of Alphabet, a company that Page served as CEO from 2015 to 2019.

Page is additionally a founding investor of Planetary Resources, an area exploration and asteroid-mining company. Originally established in 2009, the corporate was acquired by blockchain firm ConsenSys in 2018 amid funding problems. He has also shown an interest in “flying car” companies, having invested in both Kitty Hawk and Opener.

9. Sergey Brin
Age: 48
Residence: Los Altos, California
Co-founder and Board Member: Alphabet (GOOG)
Net Worth: $89 billion1

Alphabet Ownership Stake: 5% ($110.1 billion total)
Other Assets: $13.9 billion in cash

What makes Google unique, compared to the opposite companies featured on this list, is that its co-founders are relatively move on terms of total wealth. Sergey Brin’s involvement in Google follows an identical path to Page’s. After the duo founded the corporate in 1998, Brin served as co-president alongside Page until Eric Schmidt took over as CEO in 2001. Similarly, after founding Alphabet in 2015, Brin acted because the holding company’s president before stepping down in 2019 when Sundar Pichai took over as CEO.

In addition to being a highly popular computer program, Google also offers a set of online tools and services, called Google Workspace, which incorporates Gmail, Google Drive, Google Calendar, Google Meet, Google Chat, Google Docs, Google Sheets, Google Slides, and more. additionally to software, Google also deals during a wide selection of electronic devices, including its Pixel smartphones, its Pixelbook computers and tablets, its Nest smart home devices, and its Stadia gaming platform.

Brin spent much of 2019 that specialize in X, Alphabet’s “moonshot” work, which is to blame for innovative technologies just like the Waymo self-driving cars and Google Glass smart glasses. He has also donated several dollars toward researching a cure for Parkinson’s and partnered with The Michael J. Fox Foundation to plot new drugs against LRRK2, one in all the best genetic contributors to the disease.

10. Mukesh Ambani
Age: 64
Residence: Mumbai, India
Chair and Managing Director: Reliance Industries
Net Worth: $84.5 billion
Reliance Industries Ownership Stake: 42% ($86.09 billion total)
Other Assets: Mumbai residential property ($410 million private assets) and $975 million in cash

Reliance Industries was originally founded as atiny low textile manufacturer by Dhirubhai Ambani in 1966. In 1979, Dhirubhai’s son Mukesh moved to Palo Alto, California to attend Stanford grad school. A year later, Mukesh returned home at the behest of his father to oversee the development of a brand new polyester mill, during which period he also joined Reliance Industries’ board. instead of moving back to the U.S. to complete his university program, Mukesh remained in India to steer Reliance’s backward integration initiative. During the 1990s, he spearheaded the company’s efforts to create—as well as acquire—multiple petrochemical plants and petroleum refineries.

In 2002, Dhirubhai suffered a stroke and kicked the bucket. the shortage of a will resulted in an exceedingly feud between Mukesh and his brother Anil over how their father’s empire would be distributed. Three years later, because the results of a settlement brokered by their mother, the siblings agreed to separate the business, with Mukesh retaining control over refining, petrochemicals, oil and gas, and textile operations.This didn’t completely ease the stress between the 2 brothers, as they’d neither settle a legal dispute over sharing gas nor dissolve their non-compete agreements until 2010.

In 2013, Mukesh and Anil seemingly buried the hatchet with the announcement of a $220 million pact to share a fiber-optic network between their two companies.

Reliance Industries has established several highly successful subsidiaries under Mukesh’s leadership, including Reliance Retail and telecommunications company Jio. he’s also a member of the muse Board of the planet Economic Forum, an elected Foreign Member of the us National Academy of Engineering, a member of the worldwide Advisory Council of Bank of America, and a member of the International Advisory Council of The Brookings Institution.

دنیا کے 10 امیر ترین لوگ۔

سنہ 2021 تک ، زمین پر مبینہ طور پر 2،755 ارب پتی ہیں ، جن کی کل مالیت 13.1 ٹریلین ڈالر ہے۔ اس رقم میں سے ، دنیا کے سرفہرست 10 امیر ترین افراد $ 1،153 بلین ، یا تقریبا 8.8٪ ہیں ، جو کہ تقریبا 0.36 فیصد ارب پتی ہیں۔ ذیل میں 10 افراد ہیں جو فی الحال 2021 میں اس مضمون کو اپ ڈیٹ کرنے کے وقت سب سے امیر سمجھے جاتے ہیں۔ – نیوزفلیکس کے ارب پتیوں کی فہرست کے مطابق۔

نمبر1. جیف بیزوس
عمر: 57۔
رہائش: سیئٹل۔
بانی اور ایگزیکٹو چیئر: ایمیزون
مالیت: 177 بلین ڈالر
ایمیزون کی ملکیت کا حصہ: 11 (($ 178 بلین)
دیگر اثاثے: بلیو اوریجن ($ 7.15 بلین نجی اثاثے) ، واشنگٹن پوسٹ ($ 250 ملین نجی اثاثے) ، اور $ 13.4 بلین کیش

مبینہ طور پر 2،755 ارب پتی ہیں ، جن کی کل مالیت 13.1 ٹریلین ڈالر ہے
مبینہ طور پر 2،755 ارب پتی ہیں ، جن کی کل مالیت 13.1 ٹریلین ڈالر ہے

سنہ1994 میں ، جیف بیزوس نے سیئٹل کے ایک گیراج میں ایمیزون ڈاٹ کام کی بنیاد رکھی ۔ در حقیقت ، اس نے اصل میں ایک آن لائن کتابوں کی دکان کا خیال اپنے سابق باس ڈیوڈ ای شا کو پیش کیا تھا ، جو دلچسپی نہیں رکھتے تھے۔اگرچہ ایمیزون ڈاٹ کام نے اصل میں کتابوں کی فروخت شروع کی تھی ، اس کے بعد سے یہ ہر چیز کے لیے ایک اسٹاپ شاپ میں تبدیل ہوچکا ہے ، اور یہ دنیا کا سب سے بڑا خوردہ فروش ہے۔ کسی بھی شرح پر ، ‘زمین کی سب سے زیادہ گاہکوں پر مرکوز کمپنی’ کے طور پر اس کی خود کی وضاحت سے اختلاف کرنا مشکل ہے۔ اگست 2017 میں اپنی برانڈڈ اوور دی کاؤنٹر دواؤں کی وجہ سے بے حد مقبول ہوا-2020 میں ، ایمیزون کے حصص کی قیمت آن لائن شاپنگ کی بڑھتی ہوئی مانگ پر آسمان کو چھو گئی کیونکہ لاک ڈاؤن نے صارفین کو گھر پر رہنے پر مجبور کیا۔

بیزوس نے اصل میں 1997 میں ایمیزون کو پبلک کیا اور 1999 میں بل گیٹس کے بعد 100 بلین ڈالر سے زائد کی مجموعی مالیت حاصل کرنے والے پہلے آدمی بن گئے۔ واشنگٹن پوسٹ ، جسے اس نے 2013 میں خریدا تھا اور 10،000 سال کی گھڑی ، جسے لانگ ناؤ بھی کہا جاتا ہے۔ 13 جولائی ، 2021 کو ، بیزوس ، اس کے بھائی مارک ، ہوا بازی کے علمبردار ولی فنک ، اور ڈچ طالب علم اولیور ڈیمن نے بلیو اوریجن کی پہلی کامیاب عملہ پرواز مکمل کی ، محفوظ طریقے سے اترنے سے پہلے 62 میل سے اوپر کی اونچائی تک پرواز کی.

نمبر2. ایلون مسک۔
عمر: 50۔
رہائش: آسٹن ، ٹیکساس۔
شریک بانی اور سی ای او: ٹیسلا
خالص مالیت: 151 بلین ڈالر
ٹیسلا کی ملکیت کا حصہ: ($ 125 بلین)
دیگر اثاثے: خلائی ایکسپلوریشن ٹیکنالوجیز ($ 29.8 بلین نجی اثاثے) اور دی بورنگ کمپنی ($ 101 ملین نجی اثاثے)

جانئیے دنیا کے امیر ترین انسان ایلون مسک کی دلچسپ کہانی۔

ایلون مسک نے کئی سالوں میں کئی مختلف کمپنیوں میں اپنے ہاتھ رکھے ہیں۔ اصل میں اسٹینفورڈ یونیورسٹی میں داخلے کے بعد ، مسک نے اپنی حاضری کو زپ2 لانچ کرنے کے لیے موخر کر دیا ، جو آن لائن نیویگیشن کی ابتدائی خدمات میں سے ایک ہے۔ اس کوشش سے حاصل ہونے والی آمدنی کا ایک حصہ پھر ایکس ڈاٹ کام بنانے کے لیے لگایا گیا ، جو آن لائن ادائیگی کا نظام ہے جو بعد میں پے پل بن گیا۔ حالانکہ یہ دونوں سسٹم بالآخر دوسری کمپنیوں کو فروخت کیے گئے تھے ، مسک نے اپنے تیسرے پروجیکٹ ، اسپیس ایکسپلوریشن ٹیکنالوجیز (اسپیس ایکس) کے سی ای او اور لیڈ ڈیزائنر کی حیثیت سے اپنی حیثیت برقرار رکھی ہے ، جس کا مقصد خلائی تحقیق کو زیادہ سستی بنانا ہے۔

سنہ2004 میں ، مسک ٹیسلا موٹرز (اب ٹیسلا) کا ایک بڑا فنڈر بن گیا ، جس کی وجہ سے وہ سابقہ ​​طور پر کوفاؤنڈر قرار پائے اور الیکٹرک وہیکل کمپنی کے سی ای او کے طور پر ان کی موجودہ پوزیشن برقرار رہی۔الیکٹرک آٹوموبائل کی لائن کے علاوہ، جس میں سیڈان ، اسپورٹ یوٹیلیٹی گاڑیاں (ایس یو وی) ، اور 2019 میں اعلان کردہ ‘سائبر ٹرک’ شامل ہیں – ٹیسلا انرجی اسٹوریج ڈیوائسز ، آٹوموبائل لوازمات ، تجارتی سامان بھی تیار کرتی ہے ، اور اس میں سولرسیٹی کے حصول کے ذریعے 2016 ، شمسی توانائی کے نظام بھی شامل رہے۔2020 میں ، ٹیسلا کے اسٹاک کی قیمت میں ایک فلکیاتی اضافے کا سامنا کرنا پڑا ، جو سال کے آغاز سے دسمبر کے وسط تک 705 فیصد بڑھ گیا۔ یہ اسی مہینے ایس انڈ پی 500 میں شامل ہوا

سنہ2016 میں ، مسک نے دو مزید کمپنیاں ، نیورلینک اور دی بورنگ کمپنی کی بنیاد رکھی ، اس کے ساتھ وہ سابق کے سی ای او کی حیثیت سے خدمات انجام دے رہے تھے۔ نیورلنک دماغی مشین انٹرفیس ڈیوائسز تیار کر رہا ہے تاکہ فالج میں مبتلا افراد کی مدد کی جا سکے اور ممکنہ طور پر صارفین کو اپنے کمپیوٹر اور موبائل آلات کے ساتھ ذہنی طور پر بات چیت کرنے کی اجازت دی جائے۔ جو بڑے شہروں میں ٹریفک کی بھیڑ کو کم کرے گا۔

نمبر3. برنارڈ آرنولٹ۔
عمر: 72۔
رہائش: پیرس۔
سی ای او اور کرسی: “ایل وی ایم ایچ”
خالص مالیت: $ 150 بلین
کرسچن ڈائر کی ملکیت کا حصہ: 97.5٪ ($ 133 بلین)
دیگر اثاثے: مویلیس اینڈ کمپنی ایکویٹی ($ 23.3 بلین پبلک اثاثے) ، ہرمس ایکویٹی ($ 2.23 بلین عوامی اثاثے) ، کیرفور ایکویٹی ($ 900 ملین عوامی اثاثے) ، اور $ 9.48 بلین نقد

فرانسیسی شہری برنارڈ آرنولٹ دنیا کی سب سے بڑی لگژری سامان کمپنی "ایل وی ایم ایچ" کے چیئر پرسن اور سی ای او ہیں۔
فرانسیسی شہری برنارڈ آرنولٹ دنیا کی سب سے بڑی لگژری سامان کمپنی “ایل وی ایم ایچ” کے چیئر پرسن اور سی ای او ہیں۔

فرانسیسی شہری برنارڈ آرنولٹ دنیا کی سب سے بڑی لگژری سامان کمپنی “ایل وی ایم ایچ” کے چیئر پرسن اور سی ای او ہیں۔ یہ کاروبار زمین کے کچھ بڑے برانڈز کا مالک ہے ، جن میں لوئس ووٹن ، ہینسی ، مارک جیکبز ، سیفورا اور بہت کچھ شامل ہے۔ جو “ایل وی ایم ایچ” کو کنٹرول کرتا ہے ، کرسچن ڈائر “ایس ای” میں اس کے حصص کے علاوہ”ایل وی ایم ایچ” میں 6.2 فیصد اضافی ، اس کی خاندانی ملکیت والی ہولڈنگ کمپنی ، گروپ آرنالٹ ایس ای کے ذریعے منعقد ہوتے ہیں۔

تربیت کے ذریعے ایک انجینئر ، آرنلٹ کی کاروباری چوپیاں اپنے والد کی تعمیراتی فرم ، فیریٹ-ساوینیل کے لیے کام کرتے ہوئے ظاہر ہوئیں ، جس کا کنٹرول وہ 1971 میں سنبھال لیں۔ بعد میں انہوں نے فیریٹ-ساوینیل کو 1979 میں فیرینیل انکارپوریشن کے نام سے ایک رئیل اسٹیٹ کمپنی میں تبدیل کر دیا۔آرنولٹ مزید چھ سال تک فرینیل کی کرسی پر رہا ، یہاں تک کہ اس نے 1984 میں لگژری سامان بنانے والی کمپنی فنانسیئر آگاچے کو حاصل کیا اور اسے دوبارہ منظم کیا ، آخر کار کرسچن ڈائر اور لی بون مارچ کے علاوہ اس کی تمام ہولڈنگ فروخت کر دی۔

نمبر4. بل گیٹس۔
عمر: 65۔
رہائش:  واشنگٹن۔
کوفاؤنڈر: مائیکروسافٹ کارپوریشن (ایم ایس ایف ٹی) 31۔
خالص مالیت: 124 بلین ڈالر
مائیکروسافٹ کی ملکیت کا حصہ: 1.3 (($ 31.2 بلین)
دیگر اثاثے: ریپبلک سروسز ایکویٹی ($ 13.5 بلین پبلک اثاثے) ، جان ڈیری ایکویٹی ($ 10 بلین پبلک اثاثے) ، کینیڈین نیشنل ریلوے ایکویٹی ($ 9.14 بلین پبلک اثاثے) ، ایکولاب ایکویٹی ($ 6.92 بلین عوامی اثاثے) ، گیواڈان ایکویٹی ($ 5.56 بلین عوامی اثاثے) ، ایف ای ایم ایس اے ایکویٹی ($ 2.42 بلین پبلک اثاثے) ، ویسٹ مینجمنٹ ایکویٹی ($ 2.26 بلین پبلک اثاثے) ، برکشائر ہیتھ وے ایکویٹی ($ 1.87 بلین پبلک اثاثے) ، دیاجیو ایکویٹی ($ 1.77 بلین پبلک اثاثے) ، سیکا اے جی ایکویٹی ($ 1.5 بلین عوامی اثاثے) ، آرک کیپیٹل گروپ ایکویٹی ($ 1.42 بلین پبلک اثاثے) ، آٹو نیشن ایکویٹی ($ 1.33 بلین پبلک اثاثے) ، لبرٹی گلوبل ایکویٹی ($ 251 ملین پبلک اثاثے) ، فومینٹو ڈی کنسٹرکیوشنز ی کنٹراٹاس ایکویٹی ($ 200 ملین پبلک اثاثے) ، اوٹر ٹیل کارپوریشن ایکویٹی (190 ملین ڈالر) عوامی اثاثے) ، مغربی اثاثہ افراط زر سے منسلک مواقع اور انکم فنڈ ایکویٹی ($ 180 ملین عوامی اثاثے) ، مغربی اثاثہ افراط زر سے منسلک آمدنی فنڈ ($ 69.9 ملین عوامی اثاثے) ، اور $ 62.6 بلین نقد میں

ارب پتی بل گیٹس اور اہلیہ میلنڈا 27 سال کے بعد الگ ہو رہے ہیں

سنہ1975 میں ہارورڈ یونیورسٹی میں پڑھنے کے دوران ، بل گیٹس اپنے بچپن کے دوست پال ایلن کے ساتھ مل کر اصل مائیکرو کمپیوٹرز کے لیے نیا سافٹ وئیر تیار کرنے گئے۔ اس پروجیکٹ کی کامیابی کے بعد ، گیٹس نے اپنے جونیئر سال میں ہارورڈ چھوڑ دیا اور ایلن کے ساتھ مائیکروسافٹ کو تلاش کیا۔دنیا کی سب سے بڑی سافٹ وئیر کمپنی ہونے کے علاوہ ، مائیکروسافٹ اپنی ذاتی کمپیوٹر کی لائن بھی تیار کرتا ہے ، مائیکروسافٹ پریس کے ذریعے کتابیں شائع کرتا ہے ، اپنے ایکسچینج سرور کے ذریعے ای میل سروسز مہیا کرتا ہے ، اور ویڈیو گیم سسٹم اور اس سے وابستہ پردیی آلات فروخت کرتا ہے۔ اصل میں مائیکروسافٹ کے چیف سافٹ وئیر آرکیٹیکٹ ، گیٹس نے بعد میں 2008 میں کرسی کا کردار ادا کیا۔ وہ 2004 میں برک شائر ہیتھاوے کے بورڈ میں شامل ہوئے تھے انہوں نے 13 مارچ 2020 کو دونوں بورڈز سے استعفی دے دیا

سنہ2000 میں ، گیٹس کی دو انسان دوست تنظیمیں-ولیم ایچ گیٹس فاؤنڈیشن اور گیٹس لرننگ فاؤنڈیشن کو ملا کر بل اینڈ میلنڈا گیٹس فاؤنڈیشن بنائی گئی ، جس میں سے وہ اور ان کی سابقہ ​​بیوی میلنڈا گیٹس شریک چیئر ہیں ۔ فاؤنڈیشن کے ذریعے ، اس نے پولیو اور ملیریا سے لڑنے کے لیے اربوں خرچ کیے ہیں۔ اس کے علاوہ ، اس نے ایبولا سے لڑنے میں مدد کے لیے 2014 میں 50 ملین ڈالر کا وعدہ کیا۔ سنہ2010 میں ، وارین بفیٹ کے ساتھ ، بل گیٹس نے “گونگ پلیج” کا آغاز کیا ، ایک مہم جو امیر افراد کی حوصلہ افزائی کرتی ہے کہ وہ اپنی دولت کی اکثریت کو انسان دوست کاموں میں عطیہ کریں۔

نمبر5. مارک زکربرگ۔
عمر: 37۔
رہائش گاہ: پالو آلٹو ، کیلیف۔
شریک بانی ، سی ای او ، اور چیئر: فیس بک (ایف بی)
خالص مالیت: 97 بلین ڈالر
فیس بک کی ملکیت کا حصہ: 13 (($ 138 بلین) 46۔
دیگر اثاثے: 3.35 بلین ڈالر نقد اور 225 ملین ڈالر رئیل اسٹیٹ ۔

How many billions Mark Zuckerberg lost to Facebook global outage?

مارک زکربرگ نے 2004 میں ہارورڈ یونیورسٹی میں پڑھنے کے دوران ساتھی طلباء ایڈورڈو سیورین ، ڈسٹن ماسکووٹز اور کرس ہیوز کے ساتھ مل کر فیس بک تیار کی۔ جیسا کہ دوسری یونیورسٹیوں میں فیس بک کا استعمال شروع ہوا ، زکربرگ نے اپنے بڑھتے ہوئے کاروبار پر مکمل توجہ مرکوز کرنے کے لیے ہارورڈ چھوڑ دیا۔ آج ، زکربرگ فیس بک کے سی ای او اور چیئر ہیں ، جن کے Q1 2021 کے مطابق ماہانہ 2.8 بلین سے زیادہ فعال صارفین تھے

فیس بک دنیا کی سب سے بڑی سوشل نیٹ ورکنگ سروس ہے ، جو اپنے صارفین کو ذاتی پروفائل بنانے ، دوستوں اور خاندان کے ساتھ رابطہ قائم کرنے ، گروپوں میں شامل ہونے یا بنانے کے قابل بناتی ہے۔ چونکہ ویب سائٹ استعمال کرنے کے لیے آزاد ہے ، کمپنی کی زیادہ تر آمدنی اشتہارات کے ذریعے حاصل ہوتی ہے۔فیس بک (کمپنی) کئی دوسرے برانڈز کی میزبانی بھی کرتی ہے ، بشمول فوٹو شیئرنگ ایپ انسٹاگرام ، جسے اس نے 2012 میں حاصل کیا تھا۔ کراس پلیٹ فارم موبائل میسجنگ سروس واٹس ایپ اور ورچوئل رئیلٹی-ہیڈسیٹ پروڈیوسر اوکولس ، دونوں کو 2014 میں حاصل کیا گیا۔ کام کی جگہ ، اس کا انٹرپرائز کنیکٹوٹی پلیٹ فارم پورٹل ، ویڈیو کالنگ آلات کی اس کی لائن اور نووی ، ڈیم ادائیگی کے نظام کے لیے اس کا ڈیجیٹل ہونا۔زکربرگ اور ان کی اہلیہ پرسیلا چن نے 2015 میں چن زکربرگ انیشی ایٹو کی بنیاد رکھی ، ان میں سے ہر ایک شریک سی ای او کی حیثیت سے خدمات انجام دے رہا تھا۔ ان کا فلاحی ادارہ معاشرتی بیماریوں کو ٹھیک کرنے کے لیے ٹیکنالوجی سے فائدہ اٹھانا چاہتا ہے ، جیسے تعلیم کی رسائی اور معیار کو بہتر بنانا ، فوجداری انصاف کے نظام اور امریکی امیگریشن کے نظام دونوں میں اصلاحات ، رہائش کی سستی کو بہتر بنانا اور بالآخر تمام بیماریوں کا خاتمہ کرنا۔

نمبر6. وارن بفیٹ
عمر: 91۔
رہائش: اوماہا ، نیبراسکا۔
سی ای او: برکشائر ہیتھ وے (بی آر کے.اے)
خالص مالیت: 96 بلین ڈالر
برکشائر ہیتھ وے کی ملکیت کا حصہ: 38.001٪ (کل 103 بلین ڈالر)
دیگر اثاثے: ویلز فارگو اینڈ کمپنی ایکویٹی ($ 76.6 ملین پبلک اثاثے) ، یو ایس بینکارپ ایکویٹی ($ 50.2 ملین پبلک اثاثے) ، سیریٹیج گروتھ پراپرٹیز ایکویٹی ($ 38 ملین پبلک اثاثے) ، اور 1.10 بلین ڈالر کیش

سب سے مشہور لونگ ویلیو انویسٹر ، وارین بفیٹ نے 1944 میں 14 سال کی عمر میں اپنا پہلا ٹیکس ریٹرن داخل کیا ، اپنے لڑکپن کے کاغذی راستے سے اپنی کمائی کا اعلان کیا
سب سے مشہور لونگ ویلیو انویسٹر ، وارین بفیٹ نے 1944 میں 14 سال کی عمر میں اپنا پہلا ٹیکس ریٹرن داخل کیا ، اپنے لڑکپن کے کاغذی راستے سے اپنی کمائی کا اعلان کیا

سب سے مشہور لونگ ویلیو انویسٹر ، وارین بفیٹ نے 1944 میں 14 سال کی عمر میں اپنا پہلا ٹیکس ریٹرن داخل کیا ، اپنے لڑکپن کے کاغذی راستے سے اپنی کمائی کا اعلان کیا۔ 1965. اس نے کمپنی کو 1967 میں انشورنس اور دیگر سرمایہ کاری میں توسیع دی۔

بڑے پیمانے پر ‘اوراکل آف اوماہ’ کے نام سے جانا جاتا ہے ، بفیٹ نے اپنی خوش قسمتی کا بڑا حصہ کمپنیوں میں حصص خریدنے کے ذریعے بنایا ہے جو کہ سمجھنے میں آسان ہے۔ اگرچہ بہت سے سرمایہ کار ٹیک کمپنیوں میں شامل ہو رہے ہیں ، بفیٹ نے زیادہ محتاط انداز اختیار کیا ہے ، صرف اچھی طرح سے قائم شدہ کمپنیوں سے خریدنا جو سمجھنے میں آسان ہیں ، جیسے آئی بی ایم اور ایپل- وہ ایک مشہور بٹ کوائن کھلاڑی بھی ہے – اضافی طور پر ، بفیٹ نے کئی سالوں میں کمپنیوں کی ایک لمبی فہرست بھی خریدی ہے ، بشمول ڈیری کوئین ، ڈوراسیل ، جی ای آئی سی او ، اور کرافٹ ہینز۔

سرمایہ کاری سے باہر ، بفیٹ نے اپنی دولت کا بیشتر حصہ انسان دوست کوششوں کی طرف لگایا ہے۔ 2006 اور 2020 کے درمیان ، بفیٹ نے 41 بلین ڈالر دیے- جن میں سے زیادہ تر بل اینڈ میلنڈا گیٹس فاؤنڈیشن یا ان کے بچوں کے خیراتی اداروں کو گئے۔

نمبر7. لیری ایلیسن۔
عمر: 77۔
رہائش: لانائی ، ہوائی۔
شریک بانی ، سی ٹی او ، اور چیئر: اوریکل (او آر سی ایل)
خالص مالیت: $ 93 ارب
اوریکل ملکیت اسٹیک: 35.4 (($ 74.3 بلین)
دیگر اثاثے: ٹیسلا ایکویٹی ($ 11.1 بلین عوامی اثاثے) اور $ 16.6 بلین کیش ۔

سنہ1966 میں شکاگو یونیورسٹی چھوڑنے کے بعد ، لیری ایلیسن کیلیفورنیا چلی گئیں اور کئی سالوں میں کئی کمپنیوں میں بطور کمپیوٹر پروگرامر کام کیا۔
سنہ1966 میں شکاگو یونیورسٹی چھوڑنے کے بعد ، لیری ایلیسن کیلیفورنیا چلی گئیں اور کئی سالوں میں کئی کمپنیوں میں بطور کمپیوٹر پروگرامر کام کیا۔

سنہ1966 میں شکاگو یونیورسٹی چھوڑنے کے بعد ، لیری ایلیسن کیلیفورنیا چلی گئیں اور کئی سالوں میں کئی کمپنیوں میں بطور کمپیوٹر پروگرامر کام کیا۔ سب سے پہلے ، 1973 میں ، وہ الیکٹرانکس کمپنی ایمپیکس کا ملازم تھا ، جہاں اس نے مستقبل کے شراکت دار ایڈ اوٹس اور باب مائنر سے ملاقات کی۔ تین سال بعد ، ایلیسن نے پریسیسین انسٹرومینٹس میں شمولیت اختیار کی ، جو کمپنی کے ریسرچ اینڈ ڈویلپمنٹ کے نائب صدر کی حیثیت سے خدمات انجام دے رہے ہیں۔

سنہ1977 تک ، ایلیسن نے اوٹس اور مائنر کے ساتھ مل کر سافٹ ویئر ڈویلپمنٹ لیبارٹریز (ایس ڈی ایل) کی بنیاد رکھی تھی ، جس نے ، دو سال بعد ، اوریکل کو جاری کیا ، جو ساختی استفسار کی زبان استعمال کرنے کے لیے پہلا تجارتی رشتہ دار ڈیٹا بیس پروگرام تھا۔ 1982 میں اس کا نام اوریکل سسٹم کارپوریشن تھا۔ اس کے علاوہ ، ایلیسن نے دسمبر 2018 میں ٹیسلا کے بورڈ میں شمولیت اختیار کی۔

اوریکل دوسری سب سے بڑی سافٹ وئیر کمپنی ہے اور کلاؤڈ کمپیوٹنگ پروگراموں کی وسیع اقسام کے ساتھ ساتھ دوسرے سافٹ ویئر ، جیسے جاوا اور لینکس اور اوریکل ایکاڈیٹا کمپیوٹنگ پلیٹ فارم فراہم کرتی ہے۔ 2005 میں ہیومن ریسورس مینجمنٹ سسٹم فراہم کرنے والے پیپل سوفٹ ، 2006 میں کسٹمر ریلیشن شپ مینجمنٹ ایپلی کیشنز فراہم کرنے والا سیبل ، 2008 میں انٹرپرائز انفراسٹرکچر سافٹ ویئر فراہم کرنے والا بی ای اے سسٹمز ، اور 2009 میں ہارڈ ویئر اینڈ سافٹ ویئر ڈویلپر سن مائیکرو سسٹم سمیت کئی بڑی کمپنیاں۔ایلیسن نے پچھلی دہائی میں،بنیادی طور پر کیلیفورنیا میں لگژری رئیل اسٹیٹ میں لاکھوں خرچ کیے ہیں ۔ ممکنہ طور پر اس کے انتہائی متاثر کن اخراجات ، ایلیسن نے تقریبا پورے ہوائی جزیرے لینائی کو 300 ملین ڈالر میں خریدا ، وہاں ایک ہائیڈروپونک فارم اور لگژری سپا تعمیر کیا۔ حال ہی میں ، 2016 میں ، ایلیسن نے جنوبی کیلیفورنیا یونیورسٹی کو ایک نئے کینسر ریسرچ سینٹر کے لیے 200 ملین ڈالر دیئے۔

نمبر8. لیری پیج
عمر: 48۔
رہائش: پالو آلٹو ، کیلیفورنیا۔
شریک بانی اور بورڈ ممبر: الفابیٹ (گوگ)
خالص مالیت: 91.5 بلین ڈالر
حروف تہجی کی ملکیت کا حصہ: 6٪ (کل 115 بلین ڈالر)
دیگر اثاثے: $ 13.8 بلین نقد ۔

اس فہرست میں شامل کئی ٹیک ارب پتیوں کی طرح ، لیری پیج کے شہرت کے دعوے کا آغاز کالج کے ایک چھاترالی کمرے سے ہوا۔
اس فہرست میں شامل کئی ٹیک ارب پتیوں کی طرح ، لیری پیج کے شہرت کے دعوے کا آغاز کالج کے ایک چھاترالی کمرے سے ہوا۔

اس فہرست میں شامل کئی ٹیک ارب پتیوں کی طرح ، لیری پیج کے شہرت کے دعوے کا آغاز کالج کے ایک چھاترالی کمرے سے ہوا۔ 1995 میں سٹینفورڈ یونیورسٹی میں پڑھتے ہوئے ، پیج اور اس کے دوست سرگئی برن کو انٹرنیٹ تک رسائی کے دوران ڈیٹا نکالنے کی صلاحیتوں کو بہتر بنانے کا خیال آیا۔ اس جوڑی نے ایک نئی قسم کی سرچ انجن ٹیکنالوجی وضع کی جسے انہوں نے ‘بیکروب’ کا نام دیا ، جس کا نام ‘بیکنگ لنکس’ کا تجزیہ کرنے کی صلاحیت کے نام پر رکھا گیا ہے۔ وہاں سے ، پیج اور برن نے 1998 میں گوگل کو تلاش کیا ، سابقہ ​​کمپنی کے سی ای او کے طور پر خدمات انجام دیتے ہوئے جب تک کہ وہ 2001 میں سبکدوش نہ ہو گئے۔

گوگل کرہ ارض پر سب سے بڑے انٹرنیٹ سرچ انجنوں میں سے ایک ہے ، جو کہ عالمی آن لائن سرچ درخواستوں میں 70 فیصد سے زیادہ کا حصہ ہے۔ 2006 میں ، گوگل (کمپنی) نے یوٹیوب خرید کر توسیع کی ، جو صارف کے جمع کرائے گئے ویڈیوز کے لیے سب سے بڑا پلیٹ فارم ہے۔ پھر ، 2008 میں اینڈرائیڈ آپریٹنگ سسٹم کا استعمال کرتے ہوئے پہلا موبائل فون ریلیز ہوا ، جو کہ اصل میں اینڈرائیڈ انکارپوریٹڈ نے پہلے تیار کیا تھا۔ گوگل نے 2005 میں کمپنی حاصل کی۔ آج ، گوگل الفابیٹ کی ذیلی کمپنی ہے ، ایک ہولڈنگ کمپنی ہے جس کے لیے پیج نے 2015 سے 2019 تک سی ای او کی حیثیت سے خدمات انجام دیں۔

پیج سیاروں کے وسائل ، ایک خلائی تحقیق اور کشودرگرہ کان کنی کمپنی کا بانی سرمایہ کار بھی ہے۔ اصل میں 2009 میں قائم کی گئی ، کمپنی کو بلاکچین فرم کونسینسیس نے 2018 میں فنڈنگ ​​کے مسائل کے درمیان حاصل کیا تھا۔

نمبر9. سرگئی برن۔
عمر: 48۔
رہائش: لاس الٹوس ، کیلیفورنیا۔
شریک بانی اور بورڈ ممبر: الفابیٹ (گوگ)
خالص مالیت: $ 89 بلین
حروف تہجی کی ملکیت کا حصہ: ($ 110.1 بلین کل)
دیگر اثاثے: $ 13.9 بلین نقد ۔

ایک انتہائی مقبول سرچ انجن ہونے کے علاوہ ، گوگل آن لائن ٹولز اور خدمات کا ایک سوٹ بھی پیش کرتا ہے ، جسے گوگل ورک اسپیس کہا جاتا ہے ، جس میں جی میل ، گوگل ڈرائیو ، گوگل کیلنڈر ، گوگل میٹ ، گوگل چیٹ ، گوگل ڈاکس ، گوگل شیٹس ، گوگل سلائیڈز شامل ہیں
ایک انتہائی مقبول سرچ انجن ہونے کے علاوہ ، گوگل آن لائن ٹولز اور خدمات کا ایک سوٹ بھی پیش کرتا ہے ، جسے گوگل ورک اسپیس کہا جاتا ہے ، جس میں جی میل ، گوگل ڈرائیو ، گوگل کیلنڈر ، گوگل میٹ ، گوگل چیٹ ، گوگل ڈاکس ، گوگل شیٹس ، گوگل سلائیڈز شامل ہیں

اس فہرست میں شامل دیگر کمپنیوں کے مقابلے میں جو چیز گوگل کو منفرد بناتی ہے وہ یہ ہے کہ اس کے شریک بانی کل دولت کے لحاظ سے نسبتا قریب ہیں۔سرگئی برن کی گوگل میں شمولیت پیجز کی طرح کے راستے پر چلتی ہے۔اس جوڑی نے 1998 میں کمپنی کی بنیاد رکھنے کے بعد ، برن نے پیج کے ساتھ بطور شریک صدر خدمات انجام دیں یہاں تک کہ ایرک شمٹ نے 2001 میں سی ای او کا عہدہ سنبھالا۔

ایک انتہائی مقبول سرچ انجن ہونے کے علاوہ ، گوگل آن لائن ٹولز اور خدمات کا ایک سوٹ بھی پیش کرتا ہے ، جسے گوگل ورک اسپیس کہا جاتا ہے ، جس میں جی میل ، گوگل ڈرائیو ، گوگل کیلنڈر ، گوگل میٹ ، گوگل چیٹ ، گوگل ڈاکس ، گوگل شیٹس ، گوگل سلائیڈز شامل ہیں۔ سافٹ وئیر کے علاوہ ، گوگل مختلف قسم کے الیکٹرانک ڈیوائسز پر بھی کام کرتا ہے ، بشمول اس کے پکسل اسمارٹ فونز ، اس کے پکسل بک کمپیوٹرز اور ٹیبلٹس ، اس کے گھوںسلا سمارٹ ہوم ڈیوائسز اور اس کا سٹیڈیا گیمنگ پلیٹ فارم وغیرہ۔

برن نے 2019 کا زیادہ تر حصہ X ، الفابیٹ کی ‘مون شاٹ’ ریسرچ لیبارٹری پر مرکوز کیا ، جو کہ جدید ٹیکنالوجی جیسے کہ ویمو سیلف ڈرائیونگ کاروں اور گوگل گلاس سمارٹ شیشوں کے لیے ذمہ دار ہے۔ اور مائیکل جے فاکس فاؤنڈیشن کے ساتھ شراکت داری کی تاکہ”ایل آر آرکے 2″ کے خلاف نئی دوائیں وضع کی جائیں ، جو اس بیماری میں سب سے بڑا جینیاتی شراکت دار ہے۔

نمبر10. مکیش امبانی
عمر: 64۔
رہائش: ممبئی ، بھارت۔
کرسی اور منیجنگ ڈائریکٹر: ریلائنس انڈسٹریز
خالص مالیت: $ 84.5 بلین 1۔
ریلائنس انڈسٹریز کی ملکیت کا حصہ: 42٪ (مجموعی طور پر $ 86.09 بلین)
دیگر اثاثے: ممبئی رہائشی جائیداد ($ 410 ملین نجی اثاثے) اور $ 975 ملین نقد ۔

ریلائنس انڈسٹریز اصل میں دھیرو بھائی امبانی نے 1966.89 میں ٹیکسٹائل کے چھوٹے کارخانہ دار کے طور پر قائم کی تھی
ریلائنس انڈسٹریز اصل میں دھیرو بھائی امبانی نے 1966.89 میں ٹیکسٹائل کے چھوٹے کارخانہ دار کے طور پر قائم کی تھی

ریلائنس انڈسٹریز اصل میں دھیرو بھائی امبانی نے 1966.89 میں ٹیکسٹائل کے چھوٹے کارخانہ دار کے طور پر قائم کی تھی ، 1979 میں ، دھیرو بھائی کا بیٹا مکیش سٹینفورڈ بزنس سکول میں پڑھنے کے لیے پالو آلٹو ، کیلیفورنیا چلا گیا۔ ایک سال بعد ، مکیش اپنے والد کے کہنے پر ایک نئی پالئیےسٹر مل کی تعمیر کی نگرانی کے لیے گھر واپس آیا ، اس دوران وہ ریلائنس انڈسٹریز کے بورڈ میں بھی شامل ہوا۔ اپنے یونیورسٹی پروگرام کو ختم کرنے کے لیے امریکہ واپس جانے کے بجائے ، مکیش ریلائنس کے پسماندہ انضمام اقدام کی قیادت کے لیے ہندوستان میں رہے۔ 1990 کی دہائی کے دوران ، اس نے متعدد پیٹروکیمیکل پلانٹس اور پٹرولیم ریفائنریز بنانے کے ساتھ ساتھ کمپنی کے حصول کے لیے کمپنی کی کوششوں کی قیادت کی۔

سنہ2002 میں دھیرو بھائی کو فالج ہوا اور وہ چل بسے۔ وصیت کی کمی کے نتیجے میں مکیش اور اس کے بھائی انیل کے درمیان جھگڑا ہوا کہ ان کے والد کی سلطنت کیسے تقسیم ہوگی۔ تین سال بعد ، جب ان کی والدہ کی طرف سے دلال کے تصفیے کے نتیجے میں ، بہن بھائیوں نے کاروبار کو تقسیم کرنے پر رضامندی ظاہر کی ، مکیش نے ریفائننگ ، پیٹرو کیمیکلز ، تیل اور گیس اور ٹیکسٹائل آپریشنز پر کنٹرول برقرار رکھا۔ دونوں بھائیوں کے درمیان ، کیونکہ وہ نہ تو قدرتی گیس کی تقسیم پر قانونی تنازعہ طے کریں گے اور نہ ہی 2010 تک ان کے غیر مسابقتی معاہدوں کو ختم کریں گے۔2013 میں ، مکیش اور انیل نے بظاہر ان دونوں کمپنیوں کے درمیان فائبر آپٹک نیٹ ورک بانٹنے کے لیے 220 ملین ڈالر کے معاہدے کے اعلان کے ساتھ ہیچ کو دفن کردیا۔

ریلائنس انڈسٹریز نے مکیش کی قیادت میں کئی انتہائی کامیاب ماتحت ادارے قائم کیے ہیں ، جن میں ریلائنس ریٹیل اور ٹیلی کمیونیکیشن کمپنی جیو شامل ہیں۔ وہ ورلڈ اکنامک فورم کے فاؤنڈیشن بورڈ کے رکن ، ریاستہائے متحدہ کی نیشنل اکیڈمی آف انجینئرنگ کے منتخب غیر ملکی رکن ، بینک آف امریکہ کی عالمی مشاورتی کونسل کے رکن اور دی بین الاقوامی مشاورتی کونسل کے رکن بھی ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button
error: Content is protected !!