صحت

The Holy Prophet (saw) said: Soak the RAISINS in water and drink that water on an empty stomach.

حضور اکرم ﷺ نے فرمایا: میوے کورات کو پانی میں بھگو کر رکھو اور خالی پیٹ وہ پانی پی لو

ہم اپنی روزانہ زندگی میں جو کچھ کھاتے ہیں۔ ا س کا ہماری صحت برقرار رکھنے میں اہم کردار ہوتاہے۔ ہمارے باورچی خانوں میں پایا جانے والا یہ چھوٹا سا خشک میوہ عام طور پر میٹھے پکوانوں کی آرائش اور بعض دیگر کھانوں میں استعما ل کیا جاتا ہے۔

کشمش جو کہ انگو ر خشک کرکے بنائی جاتی ہے۔ اور اس کی رنگت گولڈن سبز یا سیاہ ہوسکتی ہے۔ یہ مزیدار میوہ عام استعمال کیا جاتا ہے مگر کیا آپ کو معلوم ہے کہ اگر اس کا روز استعمال کیاجائے تو آپ کو کیافوائد حاصل کرسکتےہیں۔ اگر نہیں توآج ہم آپ کو بتائیں گے۔ خشک انگور یعنی کشمش میں تازہ انگور کی نسبت صحت بخش اینٹی آکسیڈینٹ کی مقدار تقریباً تین گنا زیادہ ہوتی ہے۔ابتدائی جائزہ میں معلوم ہواکہ تما م غذاؤں سے زیادہ اینٹی آکسیڈ ینٹ کشمش میں پائے جاتےہیں۔ سرخ اور سبز انگور میں ایسے کیمیائی مادے ہوتے ہیں جو عمل کے نتیجے میں تباہ کن اثرات میں جسمانی خلیوں کو تحفظ دیتے ہیں۔ تازہ انگو رکے مقابلے میں خشک انگور میں غذائیت بخش اجزاء کی زیادتی کوئی حیرت انگیز بات نہیں ہے کیونکہ جب پھلوں کو خشک کیا جاتا ہےتو ان کے مرکبات زیادہ مقدار میں یکجا ہوتے ہیں۔ دن بھر میں تیس گرام میں کشمش کھائی جائے تو یہ ستر انگور کھانے کے برابر ہے۔ تاہم یہ بھی حقیقت ہے کہ انگور میں بھی وٹامن سی اور فائیٹؤ کیمیکلز کی تعداد زیادہ ہوتی ہے۔

کشمش سے ہم میں پوٹاشیم فائبرز اور کچھ منرلنز کی بھی قابل ذکر تعداد باقی رہتی ہے۔خشک پھلوں میں شکر کی مقدار بھی زیادہ ہوتی ہے ۔ جس کے نتیجے میں حراروں کی تعداد بھی بڑھ جاتی ہے۔ کشمش ہلکے پھلکے ناشتے کے طور پر کھانے والی بہترین چیز ہے۔ اس وجہ سے بہت سے طبی ماہرین بچوں کو سوئیٹس اور ٹافی کی جگہ کشمش ، خوبانی ،آلوبخار ا اور کھجور کی طرف رغبت دلا تے ہیں ۔ کشمش قبض کشا ہے۔ کمزور لوگوں کا وزن بڑھاتا ہے ۔کولیسٹرول میں اضافہ نہیں کرتا۔ تیزابیت اور گیس میں مفید ہے۔ خون کی کمی کو پورا کرتا ہے ۔ وائرس اور بخار کرنے والے جراثیم کوروکتا ہے۔ فائبر ز سے بھرپور ہونے کے ساتھ ساتھ کشمش میں ٹارٹاک ایسڈ بھی شامل ہوتاہے جو ہلکے جلاب جیسا اثر دکھاتا ہے ایک تحقیق کے مطابق آدھا اونس کشمش روزانہ استعمال کرنے والے افراد کا نظام ہاضمہ دگنا تیزی سے کام کرتا ہے۔سنن ابی داؤد میں درج ہے کہ نبی کریم ﷺکے پاس کچھ لوگ آئے اور آپ ﷺ سے پوچھا اے اللہ کے رسول ﷺ ! ہمارے پاس انگور ہیں۔ہمیں ان کا کیا کرنا چاہیے ۔

اللہ کے رسول ﷺ نے فرمایا: کہ ان کی کشمش بنادو۔ اس کے بعد انہوں نے پوچھا ہم اس کشمش کا کیا کریں ۔ آپ ﷺ نے جواب دیا: انہیں صبح بھگو کر رکھ دینا اور شام کو پی لینا یا شام میں بھگودینا اور صبح پی لینا اور زیادہ تاخیر نہ کرنا ورنہ وہ سرکہ بن جائے گا۔

 

The Holy Prophet (saw) said: Soak the RAISINS in water and drink that water on an empty stomach.

What we eat in our daily lives. It plays an important role in maintaining our health. This small dried fruit found in our kitchens is commonly used in garnishing desserts and some other foods. Raisins are made by drying grapes. And its color can be golden-green or black.

This delicious fruit is commonly used but do you know what benefits you can get if it is used daily. If not here’s a new product just for you! Dried grapes, raisins, contain about three times the amount of healthy antioxidants as fresh grapes. Red and green grapes contain chemicals that protect body cells from the destructive effects of the process. It is not surprising that dried grapes have more nutrients than fresh grapes because when the fruits are dried, their compounds accumulate in greater amounts. Eating thirty grams of raisins in a day is equivalent to eating seventy grapes. However, it is also a fact that grapes are also high in vitamin C and phytochemicals.

Raisins also provide us with significant amounts of potassium fiber and some minerals. Dried fruits are also high in sugar. As a result, the number of calories also increases. Raisins are a great snack. For this reason, many medical experts encourage children to use raisins, apricots, plums, and dates instead of sweets and toffees. Raisins are constipating. Increases the weight of weak people. Does not increase cholesterol. Useful in acidity and gas. Makes up for anemia. Prevents viruses and febrile germs. In addition to being rich in fiber, raisins also contain tartaric acid, which has a mild laxative effect. According to a study, people who consume half an ounce of raisins daily have twice as fast a digestive system. Some people came to the Holy Prophet and asked him: O Messenger of Allah! We have grapes. What should we do with them?

Hazrat Muhammad (PBUH) said: Make Raisins for them. Then he asked what we should do with this raisin. He replied: Let them soak in the morning and drink in the evening or run in the evening and drink in the morning and do not delay too much otherwise it will become vinegar.

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button
error: Content is protected !!