معاشیات

NADRA’s Biometric Verification For Buying US Dollars

امریکی ڈالر خریدنے کے لیے نادرا کی بائیو میٹرک تصدیق

امریکی ڈالر کے خریداروں کے لیے بایومیٹرک تصدیق لازمی ہے۔
پاکستان میں منی ایکسچینج کے لیے غیر ملکی کرنسی خریدنے کے لیے نادرا کی بائیو میٹرک تصدیق کی مجبوری سے قبل شہریوں کو صرف اپنے قومی شناختی کارڈ کی کاپی درکار تھی۔ لوگ آسانی سے امریکی ڈالر سمیت غیر ملکی کرنسی خرید سکتے ہیں لیکن نئی پیشرفت لین دین کے بہتر ریکارڈ کو برقرار رکھنے کے لیے ہے جس میں امریکی ڈالر خریدنے والے اہلکاروں کی شناخت بھی شامل ہے۔

اسٹیٹ بینک نے مقامی کرنسی کی بے قدری کو کنٹرول کرنے کے لیے کئی اقدامات کیے ہیں اور جیسا کہ ایک میڈیا آؤٹ لیٹ نے رپورٹ کیا ہے، ایکسچینج کمپنیوں نے افغانستان میں امریکی ڈالر کے بہت بڑے اخراج کو نمایاں کیا ہے۔ اسٹیٹ بینک نے تمام ایکسچینج کمپنیوں کو ہدایت کی ہے کہ وہ امریکی ڈالر کے خریداروں کے لیے بائیو میٹرک تصدیق کو لازمی بنائیں جو 500 یا اس سے زیادہ ڈالر خرید رہے ہیں۔ اس قدم سے نہ صرف بہتر نگرانی میں مدد ملے گی بلکہ غیر ملکی کرنسی کے قابل اعتراض نقدی کے بہاؤ کو بھی روکا جائے گا جو اسمگل اور غیر قانونی طور پر پاکستان سے باہر منتقل کی جاتی ہے۔

بایومیٹرک تصدیق کی اہمیت
منی ایکسچینجز میں پوائنٹ آف سیل پر بائیو میٹرک تصدیق ان افراد اور اداروں کی اسکریننگ میں مدد کرے گی جو یو ایس ڈی500 یا اس سے زیادہ خرید رہے ہیں۔ لوگ سفر اور دیگر مقاصد کے لیے اوپن مارکیٹ سے ڈالر خریدتے ہیں لیکن گزشتہ چند ماہ سے ڈالر کی خرید و فروخت اور پڑوسی ملک کو اس کا اخراج بڑھ گیا ہے۔ پہلے، ایکسچینج کمپنیاں اپنے سرپلس کا 90 فیصد بینکوں میں جمع کراتی تھیں۔ تاہم، اب وہ صرف 50 فیصد جمع کر رہے ہیں جبکہ باقی آدھا فروخت کیا جا رہا ہے، جیسا کہ ایکسچینج کمپنیز ایسوسی ایشن آف پاکستان کے سربراہ نے اطلاع دی ہے۔

بائیو میٹرک تصدیق کی مجبوری صرف خریداروں کے لیے ہے اور بیچنے والے طریقہ کار سے گزرے بغیر آسانی سے اپنی کرنسی بیچ سکتے ہیں۔ اسٹیٹ بینک کی ہدایات کے مطابق افغانستان جانے والے افراد اپنے ساتھ صرف 1000 امریکی ڈالر تک لے جا سکتے ہیں۔ سالانہ حد البتہ یو ایس ڈی 6,000 ہے اگر کوئی اکثر افغانستان کا سفر کرتا ہے۔

آپ امریکی ڈالر کہاں سے خرید سکتے ہیں؟
امریکی ڈالر ملک میں کسی بھی رجسٹرڈ منی ایکسچینج سے خریدے جا سکتے ہیں۔ اسٹیٹ بینک نے منی ایکسچینجز کو بائیومیٹرک تصدیق کو 22 اکتوبر 2021 تک نافذ کرنے کی ہدایت کی تھی لیکن نادرا سے رابطہ قائم کرنے کے لیے سسٹم کی عدم دستیابی کی وجہ سے ڈیڈ لائن کو پورا نہیں کیا گیا۔ لازمی بائیو میٹرک تصدیق کے نظام کو لاگو کرنے اور سسٹم کو تیار کرنے کے لیے رعایتی مدت دینے کے لیے، اسٹیٹ بینک نے منی ایکسچینجز کو نادرا کی ای سہولت فرنچائزز سے 5 نومبر 2021 تک بائیو میٹرک سرٹیفیکیشن استعمال کرنے کی اجازت دی ہے۔ اس نئی ڈیڈ لائن کے بعد، ایکسچینج کمپنیاں نادرا کی ای سہولت فرنچائزز سے بائیو میٹرک سرٹیفیکیشن استعمال کریں گی۔ بائیو میٹرک تصدیق کے لیے انڈرائیڈ ایپلیکیشن یو ایس ڈی500 اور اس سے اوپر کی فروخت کے لیے۔

نادرا ای سہولت

NADRA E-SAHULAT
NADRA E-SAHULAT

نادرا نے ای سہولت پلیٹ فارم کو 2008 میں ایک ای کامرس پلیٹ فارم کے طور پر مختلف الیکٹرانک لین دین کرنے کے لیے تیار کیا۔ ان خدمات میں یوٹیلیٹی بلز کی ادائیگی، عطیات دینا، فیس جمع کروانا اور ملکی ترسیلات زر کی منتقلی شامل ہے۔ حکومت کے زیر انتظام پلیٹ فارم پورے پاکستان میں 12,000 فرنچائزز کے ساتھ ملک کا سب سے بڑا پلیٹ فارم ہے جو نہ صرف شہریوں تک، خاص طور پر پسماندہ علاقوں میں خدمات کی رسائی کو بڑھاتا ہے بلکہ شہریوں کی بائیو میٹرک تصدیق کا بھی ذمہ دار ہے۔ حکومت کی طرف سے ای سہولت پروگرام کو زکوٰۃ اور پنشن جیسی ادائیگیوں کے لیے بھی استعمال کیا جاتا ہے۔

BIOMETRIC VERIFICATION MANDATORY FOR US DOLLAR BUYERS

Prior to the compulsion of NADRA’s biometric verification for getting foreign currency for money exchanges in Pakistan, the citizens only needed a replica of their national positive identification. People could buy foreign currencies including US dollars easily but the new development is to take care of a higher record of transactions which has an identification of personnel buying USD.

SBP has taken several steps to manage the steep depreciation of the local currency and as reported by a media outlet, exchange companies have highlighted a large outflow of USD to Afghanistan. The SBP has directed all exchange companies to form biometric verification mandatory for US dollar buyers who are buying USD 500 or more. This step won’t only help in better monitoring but also stop objectionable cash outflow of foreign currency that’s smuggled and illegally transferred out of Pakistan.

IMPORTANCE OF BIOMETRIC VERIFICATION
Biometric verification at point of sale in money exchanges will help in screening individuals and entities who are buying USD 500 or more. People buy dollars from the open marketplace for travelling and other purposes but within the past few months, dollar buying and its outflow to the neighbouring country has increased. Previously, exchange companies were depositing 90 percent of their surplus to banks; however, now they’re only depositing 50 percent while the opposite half is being sold out, as reported by the top of the Exchange Companies Association of Pakistan.

The compulsion of biometric verification is merely for the buyers and sellers can easily sell their currency without surfing the procedure. As per the instructions of the SBP, people travelling to Afghanistan can only carry up to USD 1,000 with them. The annual limit however is USD 6,000 a year if someone frequently travels to Afghanistan.

WHERE are you able to BUY US DOLLARS?
The US dollars will be bought at any registered money exchange within the country. The SBP had directed money exchanges to implement biometric verification by October 22nd, 2021 but thanks to the unavailability of the system to attach with NADRA, the deadline wasn’t met. so as to implement the compulsory biometric verification system and provide a grace period to develop the system, SBP has allowed money exchanges to use biometric certification from NADRA’s e-Sahulat franchises till the day, 2021. Post this new deadline, exchange companies will use NADRA’s android application for biometric verification purchasable of USD 500 and above.

NADRA E-SAHULAT

NADRA E-SAHULAT
NADRA E-SAHULAT

NADRA developed the e-Sahulat platform back in 2008 as an e-commerce platform to perform different electronic transactions. These services include paying utility bills, giving donations, submitting fees and transferring domestic remittances. The government-run platform is one among the most important within the country with 12,000 franchises across Pakistan that not only increases the services outreach to citizens, especially in underprivileged areas but is additionally accountable for biometric verification of the citizens. The e-Sahulat programme is additionally employed by the govt. for the disbursement of payments like zakat and pension.

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button
error: Content is protected !!