TOURISM

Metro Bus Islamabad – Route, Stations, Fares, Timings And Distance

میٹرو بس اسلام آباد - روٹ، اسٹیشن، کرایہ، ٹائمنگ اور فاصلے

Metro Bus Islamabad – Route, Stations, Fares, Timings And Distance

The Islamabad metro bus Islamabad route is extremely long and is above 22 kilometres. It’s a quick travel structure, operational within the Islamabad–Rawalpindi resident zone of Pakistan.

The administration of the Islamabad Metro bus plan was to urge inaugurated in 2015 on June 4. Metro Bus also extends 22 kilometres between the PAK Secretariat in Islamabad and therefore the Saddar in Rawalpindi. The following phase is at the moment within the process of construction; it’s prolonged 25.6 kilometres within the middle of the Peshawar Morr Interchange and New Islamabad International Airport.

This upwelling will upturn a minimum of nine stations. These are:

  1. NHA Station
  2. NUST Station G-10 Station
  3. Badana Kalan Station
  4. G T Road Station
  5. G-1 Station
  6. Peshawar-Islamabad Motorway
  7. Islamabad-Lahore Motorway Intersection Station
  8. Airport Station.

The organization practices an advanced transportation system and also the e-ticketing method. Punjab transit controls this advanced system.

The Process Of Development Of The Metro Bus
Construction of this technique started on 28th February. It absolutely was completed in 2015 April. It’s 68 modes of transport initially developing on the development.

Progress of the development system was between the national government and also the Punjab joint government. The first date for introducing the bus was 28th February 2015. However, it absolutely was overdue due to the development of the drainage networks.

Ex-Prime Minister Nawaz Sharif introduced the Metro bus on June 4, 2015. Indeed, thanks to the assistance of the metro transport administration, the issues regarding the seepage of water stayed incomplete. It brought the immersion of the underground transport stations during a storm rainstorm.

At first, the responsibility was out-of-the-way into five bundles, where Package-1 comprised flyovers, extensions, and rambler passageways.

This construction cost of metro bus station Islamabad is about a whole expense of 33.5 billion. The Punjab government gave the authority to Habib Construction Services, which remains one of Pakistan’s most prominent construction organizations.

According to some studies of Punjab authority, the provincial and federal governments who run administrations held hands to begin a Metro Bus project within the mid-2010s. The intention was to associate Islamabad and Rawalpindi – the dual urban communities and back off the gridlock on the passage.

Metro Transport Administration To Islamabad air terminal From March 23

Peshawar Mor Central Station will work to induce to the purpose. The National Highway Authority (NHA) had recently finished the 27 km street from Peshawar Mor to the New Islamabad Airport in March last year. the whole expense caused was Rs 16 billion.

At the first step of the highway, a bus transport administration will work from Islamabad to the current central station from three distinct places. An aggregate of 30 metro means of transport will run on this development, which can begin a day from 7 am to 11 pm. thanks to the new passage, this era will rise. the trial on this course is Rs 30 per traveller.

Fares, timings and Features Of Metro Bus Islamabad
The Islamabad Metro bus timing is from 6:15 at the start of the day to the late 10 pm. The Metro Bus agenda uses a fast Carriage Structure and an e-ticket structure. It remains supervised by the Punjab Metro Bus Authority (PMBA).

Even though it deals with the mechanical structure done through Punjab IT Board, the Metro transport Rawalpindi timings are identical because both the buses are equitant to the similar transport system.

Aside from this, there are category stalls, lifts, toiletries, stage screens, entryways for programmed toll groups and lots of such conveniences that support secure and straightforward tourism for the travellers.

There is a focal ITS room that appears at the entire activity of the transport rapid travel agenda. Travellers within the Metro Bus in Islamabad are pleased due to the advanced conveniences. Like the air-conditioned facility and access to free wireless internet.
Instructions to get The Ticket

If you buy one direction ticket, travellers can make the most of the Metro Bus in Islamabad for 1 hour and a quarter-hour. Extra costs are going to be charged for long-distance.

When a traveller uses a Metro Bus Card, he has to pay just a one-time fee for the whole outing, which comprises three nearby tours, thanks to the coordinated passage strategy. The Metro bus Islama contact number is (051) 111-222-627.

In the Ticket coin machine, customers must choose the Metro Bus Card option if they need the metro bus card. The Metro Bus Card costs around 130rs. After giving the card for payment, individuals would collect the strapline of the Metro Bus Card. Travellers can return the card and recover the deposit. This facility is barely available when the card is functioning appropriately.

Facts & Figures About Islamabad Metro Bus

  1. The Islamabad Metro Bus framework includes two courses, which is comprehensively referred to as Phase 1 and Phase 2
  2. The play of the Islamabad Metro course covers around 25.6 kilometres from Peshawar Morr Interchange to New Islamabad International Airport.
  3. The structure of the Islamabad Metro bus uses an e-tagging framework
  4. Islamabad-Rawalpindi Metro Bus costs above forty-four billion rupees, counting twenty-four transport stations
  5. Significant expenses of Metro Buses in Islamabad incorporate activity, acquirement and support
  6. Metro Bus Corridor’s absolute length is 23 km having 8.6km elevated,
  7. Sixty buses for transport facilities are getting used out of the sixty-eight busses
  8. The Metro Bus organization’s Phase 1 covers 23 kilometres between Pak Secretariat in Islamabad and Saddar in Rawalpindi
  9. Fixed PKR 30 because of the single direction of toll cost at every toll station. it’s not changed although there was an increase in petroleum costs.

Metro Transport Extension
As arranged, the course of the capital city’s metro transport framework is a long route from Peshawar Mor to Islamabad International Airport (IIA). It’ll essentially upgrade the network between the air terminal and lots of critical regions of town, working with suburbanites consistently.

A bus transport administration will associate the Peshawar Mor station, which is the beginning stage of the course, with various pieces of the capital. Work on a 27km street for the fresh course of the metro transport was finished by the National Highway Authority (NHA) last year with an all-out cost of PKR 16 Billion.

The acquisition cycle of 30 new means of transport for the Peshawar Mor-Islamabad Airport BRT course is current. It’ll be finished and opened on March 23-Pakistan Resolution Day-this year.

Bus Station Capital Mass Transit Authority (CMTA) arrangement is additionally underway to control the tasks of the metro transport administration in Islamabad. Once settled, the CMTA is going to be straightforwardly overseen and constrained by the Capital Development Authority (CDA).

Route Of Metro bus station In Islamabad

  1. Marrir Chowk
  2. Saddar
  3. Committee Chowk
  4. Waris Khan
  5. Liaquat Bagh
  6. Rehmanbad
  7. Chandni Chowk
  8. Shamsabad
  9. IJ.P
  10. Faizabad
  11. Khyaban-e-johar
  12. March ground
  13. Sixth Road
  14. Ibn e Sina
  15. Shaheed-e-milat
  16. Faiz Ahmad Faiz
  17. Potohar
  18. Seventh Avenue
  19. Exchange
  20. Pims
  21. Kashmir Highway
  22. Chaman
  23. Katchery
  24. Pak Secretariat

Metro Bus Lahore

Metro bus Lahore got inaugurated on February 10, 2013. It’s also gained and achieved a ridership of 179,104 daily. Until May 2017, the metro bus Lahore has given transit to 210 million travellers.

میٹرو بس اسلام آباد – روٹ، اسٹیشنز، کرایے، اوقات اور فاصلہ

اسلام آباد میٹرو بس اسلام آباد کا روٹ بہت لمبا ہے اور 22 کلومیٹر سے زیادہ ہے۔ یہ ایک تیز رفتار سفری ڈھانچہ ہے، جو پاکستان کے اسلام آباد-راولپنڈی کے رہائشی زون میں سرگرم عمل ہے۔ اسلام آباد میٹرو بس پلان کی انتظامیہ نے 2015 میں 4 جون کو افتتاح کیا تھا۔

میٹرو بس اسلام آباد میں پاک سیکرٹریٹ اور راولپنڈی میں صدر کے درمیان 22 کلومیٹر تک پھیلی ہوئی ہے۔ اس کے بعد کا مرحلہ ابھی تعمیر کے عمل میں ہے۔ یہ پشاور موڑ انٹرچینج اور نیو اسلام آباد انٹرنیشنل ایئرپورٹ کے درمیان 25.6 کلومیٹر طویل ہے۔

یہ اپ ویلنگ کم از کم نو اسٹیشنوں کو اوپر لے جائے گی۔ یہ این ایچ اے سٹیشن، نسٹ سٹیشن جی-10 سٹیشن، بڈانہ کلاں سٹیشن، جی ٹی روڈ سٹیشن، جی-1 سٹیشن، پشاور-اسلام آباد موٹروے، اسلام آباد لاہور موٹروے انٹرسیکشن اسٹیشن اور ایئرپورٹ اسٹیشن کو مربوط کرے گا۔ تنظیم جدید نقل و حمل کے نظام اور ای ٹکٹنگ کے طریقہ کار پر عمل کرتی ہے۔ پنجاب ٹرانزٹ اس جدید نظام کو کنٹرول کرتا ہے۔

میٹرو بس کی تعمیر کا عمل
اس سسٹم کی تعمیر 28 فروری کو شروع ہوئی تھی۔ یہ اپریل 2015 میں مکمل ہوا۔ اس میں پہلے تعمیراتی کام کے دوران نقل و حمل کے 68 طریقے ہیں۔ تعمیراتی نظام کی پیشرفت قومی حکومت اور پنجاب کی مشترکہ حکومت کے درمیان تھی۔ بس کو متعارف کرانے کی ابتدائی تاریخ 28 فروری 2015 تھی۔ تاہم، نکاسی آب کے نیٹ ورکس کی تعمیر کی وجہ سے یہ التوا کا شکار تھی۔

سابق وزیر اعظم نواز شریف نے 4 جون 2015 کو میٹرو بس متعارف کروائی، درحقیقت میٹرو ٹرانسپورٹ انتظامیہ کی مدد کی وجہ سے پانی کے اخراج سے متعلق مسائل ادھورے رہ گئے۔ اس نے طوفانی بارشوں کے دوران زیر زمین ٹرانسپورٹ سٹیشنوں کو غرق کر دیا۔

مخصوص زون میں بارش پورے سال معمول سے زیادہ رہی، جس سے ترقی کے دوران مزید نمایاں التوا واقع ہوئی۔ پہلے پہل، ذمہ داری پانچ بنڈلوں میں تھی، جہاں پیکج-1 میں فلائی اوور، ایکسٹینشن، اور ریمبلر گزرگاہیں شامل تھیں۔میٹرو بس سٹیشن اسلام آباد کی تعمیراتی لاگت تقریباً 33.5 بلین ہے۔ پنجاب حکومت نے حبیب کنسٹرکشن سروسز کو یہ اختیار دے دیا، جو کہ پاکستان کی سب سے نمایاں تعمیراتی تنظیموں میں سے ایک ہے۔

پنجاب اتھارٹی کے کچھ جائزوں کے مطابق، انتظامیہ چلانے والی صوبائی اور وفاقی حکومتوں نے 2010 کی دہائی کے وسط میں میٹرو بس پراجیکٹ شروع کرنے کے لیے ہاتھ جوڑے تھے۔ اس کا مقصد اسلام آباد اور راولپنڈی – جڑواں شہری برادریوں کو جوڑنا اور گزرنے کے راستے پر لگی رکاوٹ کو دور کرنا تھا۔

میٹرو ٹرانسپورٹ انتظامیہ 23 مارچ سے اسلام آباد ایئر ٹرمینل تک

پشاور موڑ سنٹرل اسٹیشن پوائنٹ تک پہنچنے کے لیے کام کرے گا۔ نیشنل ہائی وے اتھارٹی (این ایچ اے) نے حال ہی میں گزشتہ سال مارچ میں پشاور موڑ سے نیو اسلام آباد ایئرپورٹ تک 27 کلومیٹر طویل سڑک کو مکمل کیا تھا۔ مجموعی اخراجات 16 ارب روپے تھے۔

ہائی وے کے ابتدائی مرحلے میں، ایک بس ٹرانسپورٹ انتظامیہ اسلام آباد سے اس مرکزی اسٹیشن تک تین الگ الگ مقامات سے کام کرے گی۔ اس ترقی پر مجموعی طور پر 30 میٹرو ذرائع نقل و حمل چلیں گے، جو ہر روز صبح 7 بجے سے رات 11 بجے تک شروع ہوگی۔ نئے گزرنے کی وجہ سے یہ مدت بڑھے گی۔ اس کورس کا راستہ فی مسافر 30 روپے ہوگا۔

میٹرو بس اسلام آباد کی گزرگاہیں، کرایے، اوقات اور خصوصیات
اسلام آباد میٹرو بس کا وقت دن کے شروع میں 6:15 سے رات 10 بجے تک ہے۔ میٹرو بس کا ایجنڈا کوئیک کیریج سٹرکچر اور ای ٹکٹ کا ڈھانچہ استعمال کرتا ہے۔ اس کی نگرانی پنجاب میٹرو بس اتھارٹی (پی ایم بی اے) کرتی ہے۔

اگرچہ یہ پنجاب آئی ٹی بورڈ کے ذریعے کیے جانے والے مکینیکل ڈھانچے سے متعلق ہے، لیکن میٹرو ٹرانسپورٹ راولپنڈی کے اوقات ایک جیسے ہیں کیونکہ دونوں بسیں ایک جیسے ٹرانسپورٹ سسٹم کے مساوی ہیں۔اس کے علاوہ، زمرہ جات کے اسٹالز، لفٹیں، بیت الخلاء، اسٹیج اسکرین، پروگرام شدہ ٹول گروپس کے لیے داخلے کے راستے اور ایسی بہت سی سہولتیں ہیں جو مسافروں کے لیے محفوظ اور سادہ سیاحت کو آسان بنا دیتی ہیں۔

ایک فوکل آئی ٹی ایس کنٹرول روم ہے جو ٹرانسپورٹ ریپڈ ٹریول ایجنڈے کی پوری سرگرمی کو دیکھتا ہے۔ اسلام آباد میں میٹرو بس کے مسافر جدید سہولیات کی وجہ سے خوش ہیں۔ جیسے ایئر کنڈیشنڈ سہولت اور مفت وائرلیس انٹرنیٹ تک رسائی۔

ٹکٹ خریدنے کے لیے ہدایات

اگر آپ سنگل ڈائریکشن ٹکٹ خریدتے ہیں تو مسافر اسلام آباد میں 1 گھنٹہ 15 منٹ تک میٹرو بس کا فائدہ اٹھا سکتے ہیں۔ لمبی دوری کے لیے اضافی قیمت وصول کی جائے گی۔

جب کوئی مسافر میٹرو بس کارڈ استعمال کرتا ہے، تو اسے گزرنے کی مربوط حکمت عملی کی وجہ سے کل باہر نکلنے کے لیے صرف ایک وقتی فیس ادا کرنی پڑتی ہے، جس میں تین قریبی دوروں پر مشتمل ہوتا ہے۔ میٹرو بس اسلام کا رابطہ نمبر (051) 111-222-627 ہے۔

ٹکٹ وینڈنگ مشین میں، صارفین کو میٹرو بس کارڈ کا اختیار منتخب کرنا چاہیے اگر ان کے پاس میٹرو بس کارڈ ہے۔ میٹرو بس کارڈ کی قیمت تقریباً 130 روپے ہے۔ ادائیگی کے لیے کارڈ دینے کے بعد، افراد کو میٹرو بس کارڈ کی پٹی جمع کرنی ہوگی۔ مسافر کارڈ واپس کر سکتے ہیں اور ڈپازٹ کی وصولی کر سکتے ہیں۔ یہ سہولت صرف اس وقت دستیاب ہے جب کارڈ مناسب طریقے سے کام کر رہا ہو۔

اسلام آباد میٹرو بس کی معلومات اور حقائق

نمبر1: اسلام آباد میٹرو بس کے فریم ورک میں دو کورسز شامل ہیں، جنہیں جامع طور پر فیز 1 اور فیز 2 کہا جاتا ہے۔

نمبر2: اسلام آباد میٹرو کورس کا دوسرا دورانیہ پشاور موڑ انٹر چینج سے نیو اسلام آباد انٹرنیشنل ایئرپورٹ تک تقریباً 25.6 کلومیٹر پر محیط ہے۔

نمبر3: اسلام آباد میٹرو بس کا ڈھانچہ ای ٹیگنگ فریم ورک کا استعمال کرتا ہے۔

نمبر4: اسلام آباد-راولپنڈی میٹرو بس کی لاگت اڑتالیس ارب روپے سے زیادہ ہے، جس میں چوبیس ٹرانسپورٹ اسٹیشن ہیں

نمبر5: اسلام آباد میں میٹرو بسوں کے اہم اخراجات میں سرگرمی، حصول اور مدد شامل ہے۔

نمبر6:میٹرو بس کوریڈور کی مطلق لمبائی 23 کلومیٹر ہے اور 8.6 کلومیٹر بلند ہے،

نمبر7: اڑسٹھ بسوں میں سے ساٹھ بسیں ٹرانسپورٹ کی سہولیات کے لیے استعمال کی جا رہی ہیں۔

نمبر8:میٹرو بس تنظیم کا فیز 1 اسلام آباد میں پاک سیکرٹریٹ اور راولپنڈی میں صدر کے درمیان 23 کلومیٹر پر محیط ہے

نمبر9: ہر ٹول اسٹیشن پر ٹول لاگت کی واحد سمت کے طور پر 30 روپے طے کیا گیا ہے۔ پیٹرولیم کی قیمتوں میں اضافے کے باوجود اس میں کوئی تبدیلی نہیں آئی۔

میٹرو ٹرانسپورٹ کی توسیع پر اضافی تفصیلات

جیسا کہ ترتیب دیا گیا ہے، دارالحکومت کے میٹرو ٹرانسپورٹ فریم ورک کا کورس پشاور موڑ سے اسلام آباد انٹرنیشنل ایئرپورٹ (آئی آئی اے) تک ایک طویل راستہ ہے۔ یہ بنیادی طور پر ہوائی ٹرمینل اور شہر کے بہت سے اہم علاقوں کے درمیان نیٹ ورک کو اپ گریڈ کرے گا، مضافاتی علاقوں کے ساتھ مسلسل کام کرے گا۔

ایک بس ٹرانسپورٹ انتظامیہ پشاور موڑ سٹیشن کو جو کہ کورس کا ابتدائی مرحلہ ہے، دارالحکومت کے مختلف حصوں سے منسلک کرے گی۔ میٹرو ٹرانسپورٹ کے نئے کورس کے لیے 27 کلومیٹر سڑک پر کام نیشنل ہائی وے اتھارٹی (این ایچ اے) نے گزشتہ سال 16 بلین روپے کی تمام لاگت سے مکمل کیا تھا۔

پشاور موڑ-اسلام آباد ایئرپورٹ بی آر ٹی کورس کے لیے 30 نئے ذرائع آمدورفت کے حصول کا سلسلہ جاری ہے۔ اس سال 23 مارچ یوم قرارداد پاکستان پر اسے مکمل اور کھولا جائے گا۔

اسلام آباد میں میٹرو ٹرانسپورٹ انتظامیہ کے کاموں کو منظم کرنے کے لیے بس سٹیشن کیپٹل ماس ٹرانزٹ اتھارٹی (سی ایم ٹی اے) کا انتظام بھی جاری ہے۔ ایک بار طے ہوجانے کے بعد، سی ایم ٹی اے کی براہ راست نگرانی کی جائے گی اور کیپٹل ڈیولپمنٹ اتھارٹی (سی ڈی اے) کی طرف سے اس پر پابندی ہوگی۔

اسلام آباد میں میٹرو بس اسٹیشن کے روٹس

نمبر1:شادی چوک
نمبر2:صدر
نمبر3:کمیٹی چوک
نمبر4:وارث خان
نمبر5:لیاقت باغ
نمبر6:رحمان آباد
نمبر7:چاندنی چوک
نمبر8:شمس آباد
نمبر9:آئی جے پی
نمبر10:فیض آباد
نمبر11:خیابانِ جوہر
نمبر12:مارچ گراؤنڈ
نمبر13:چھٹی سڑک
نمبر14:ابن سینا
نمبر15:شہید ملت
نمبر16:فیض احمد فیض
نمبر17:پوٹھوہار
نمبر18:سیونتھ ایونیو
نمبر19:اسٹاک ایکسچینج
نمبر20:پمز
نمبر21:شاہراہ کشمیر
نمبر22:چمن
نمبر23:کچہری
نمبر24:پاک سیکرٹریٹ

میٹرو بس لاہور

میٹرو بس لاہور کا افتتاح 10 فروری 2013 کو ہوا۔ اس نے روزانہ 179,104 افراد کی سواری بھی حاصل کی ہے۔ مئی 2017 تک، میٹرو بس لاہور نے 210 ملین مسافروں کو ٹرانزٹ فراہم کیا ہے۔

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published.

Back to top button