اسلامک

شوہر کی ناشکری کرنا۔ اور کفر (مختلف درجات) کم (یا زیادہ) درجوں کا ہے۔

حَدَّثَنَا عَبْدُ اللَّهِ بْنُ مَسْلَمَةَ، عَنْ مَالِكٍ، عَنْ زَيْدِ بْنِ أَسْلَمَ، عَنْ عَطَاءِ بْنِ يَسَارٍ، عَنِ ابْنِ عَبَّاسٍ، قَالَ قَالَ النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم ‏”‏ أُرِيتُ النَّارَ فَإِذَا أَكْثَرُ أَهْلِهَا النِّسَاءُ يَكْفُرْنَ ‏”‏‏.‏ قِيلَ أَيَكْفُرْنَ بِاللَّهِ قَالَ ‏”‏ يَكْفُرْنَ الْعَشِيرَ، وَيَكْفُرْنَ الإِحْسَانَ، لَوْ أَحْسَنْتَ إِلَى إِحْدَاهُنَّ الدَّهْرَ ثُمَّ رَأَتْ مِنْكَ شَيْئًا قَالَتْ مَا رَأَيْتُ مِنْكَ خَيْرًا قَطُّ ‏”‏‏.‏

ابن عباس رضی اللہ عنہما بیان کرتے ہیں

رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: مجھے جہنم کی آگ دکھائی گئی اور اس میں رہنے والوں کی اکثریت ناشکری کرنے والی عورتیں تھیں۔

پوچھا گیا کہ کیا یہ اللہ کے ساتھ کفر کرتے ہیں؟ (یا وہ اللہ کی ناشکری کرتی ہیں؟) آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے جواب دیا، ‘وہ اپنے شوہروں کی ناشکری کرتی ہیں اور ان پر کیے گئے احسانات اور نیکیوں کی ناشکری کرتی ہیں۔ اگر تم ہمیشہ ان میں سے کسی کے ساتھ نیکی کرتے رہے اور پھر وہ تم میں کوئی چیز دیکھے (اپنی پسند کی نہیں) تو وہ کہے گی کہ میں نے تم سے کبھی کوئی بھلائی نہیں لی۔

حوالہ: صحیح البخاری 29
کتابی حوالہ: کتاب 2، حدیث 22
یو ایس سی-ایم ایس اے ویب (انگریزی) حوالہ: والیوم۔ 1، کتاب 2، حدیث 29
(فرسودہ نمبرنگ اسکیم)

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button
error: Content is protected !!