تعلیم

زندگی کے 5اسباق جو اسکولوں میں نہیں پڑھائے جاتے ہیں۔

اسکولوں کا مقصد بچوں کو ایک مکمل زندگی بنانے کے لیے علم اور اوزار فراہم کرکے بڑھنے میں مدد کرنا ہے۔ لیکن حقیقت یہ ہے کہ دنیا بھر میں زیادہ تر مقامات پر اسکول بچوں کو وہ سبق نہیں پڑھا رہے ہیں جو اس قسم کی زندگی گزارنے کے لیے ضروری ہیں۔ ایک مناسب قسم کی تعلیم میں زندگی کی مہارتوں کو سیکھنا شامل ہونا چاہئے جو ایک شخص اپنی ساری زندگی تعلقات اور کیریئر کو نیویگیشن کرنے کے لئے اٹھائے گا۔ موجودہ تعلیم بہت سے پہلوؤں کی تعلیم نہیں دے رہا ہے جو عام طور پر زندگی میں کامیابی اور ترقی کے لیے ضروری ہیں جیسے کہ مالی ذمہ داریاں اور سرمایہ کاری وغیرہ۔

ذیل میں وہ اسباق ہیں جو بچوں کو اسکولوں میں نہیں پڑھائے جاتے ہیں حالانکہ ان کا جاننا ہر فرد کے لیے انتہائی ضروری ہے

اندرونی خوف کا سامنا

بچپن بچوں کے لیے بہت سے فوبیا لاتا ہے جیسے اندھیرے کا خوف، گرج چمک، راکشسوں کا، ڈاکٹر کے پاس جانا یا یہاں تک کہ اسکول جانا۔ یہ بچوں کو ایسی صورتحال سے خوفزدہ کرتا ہے جو بالغوں کو خطرہ نہیں لگتا ہے۔ یہ وہ چیز ہے جو بچوں میں اس وقت نظر نہیں آتی جب وہ اسکول جاتے ہیں کیونکہ انہیں اپنے نصاب پر توجہ مرکوز کرنے کی طرف دھکیل دیا جاتا ہے۔ لیکن جب تک بچوں کو پریشانیوں اور خوف کے بارے میں بات کرنے کی ترغیب نہیں دی جاتی، وہ ساری زندگی ان کا سامنا کرنے سے قاصر رہتے ہیں۔

ذہنیت اور عادات کی تبدیلی

کم عمری میں بچوں کی صحیح ذہنیت تیار کرنا بہت ضروری ہے لیکن بدقسمتی سے اسکولوں میں اس پر بالکل توجہ نہیں دی جاتی۔ جبکہ جب بچے یہ سیکھتے ہیں کہ کوشش کرنا اور حکمت عملیوں کا استعمال کرنا انہیں ہوشیار بنا سکتا ہے، تو وہ مزید حاصل کرنے کے لیے سخت کوشش کرتے ہیں۔ اسکولوں کو یہ سمجھنے میں بچوں کی مدد کرنی چاہیے کہ ان کے دماغ کس قابل ہیں اور وہ کیا حیرت انگیز چیزیں کر سکتے ہیں۔

زیادہ سے زیادہ صلاحیت کو ظاہر کرنا

اساتذہ کی ذمہ داری یہ ہے کہ وہ بچے کو کسی ایسے شخص میں تبدیل کرنے میں مدد کریں جو بڑا ہو سکتا ہے اور اپنے آپ کو بیرونی دنیا میں ظاہر کر سکتا ہے۔ یہ بالکل ایسے ہی ہے جیسے ایک کلی سے ایک مکمل پھول تک کھلنا۔ اسکول بچوں کو کھلنے اور بڑھنے اور جسمانی، جذباتی، اور تعلیمی لحاظ سے محفوظ محسوس کرنے کے لیے ایک محفوظ جگہ فراہم کر سکتے ہیں۔ یہ دیکھ کر واقعی مایوسی ہوتی ہے کہ آج کل، اسکول بچوں کو کامیاب ہونے کے لیے ایک حد سے زیادہ شدید جذباتی ماحول فراہم کرتے ہیں۔

اپنا شوق تلاش کرنا

بچوں کے لیے اسکول کی تعلیم کا اصل مقصد اپنے شوق کو تلاش کرنا سیکھنا ہے۔ لیکن موجودہ سکول سسٹم بچوں کو الجبرا یا کیمسٹری لینے پر مجبور کرتا ہے یہ جانے بغیر کہ وہ ان مضامین میں دلچسپی بھی رکھتے ہیں یا نہیں۔ یہ جدید دور کے والدین کو پابند سلاسل کرتا ہے اور وہ مختلف موسم گرما کے پروگراموں یا اضافی کلاسوں کے درمیان دوڑتے ہوئے یہ جاننے کی کوشش کرنے سے قاصر رہتے ہیں کہ ان کے بچے اصل میں کیا سیکھنا چاہتے ہیں۔

آن لائن پیسہ کمانے کے لیے

بہت سارے بچے ہیں جو اپنی پڑھائی کے ساتھ ساتھ اضافی پیسے کمانا چاہتے ہیں۔ لیکن اسکول اس معاملے میں بھی ان کی مدد نہیں کرتے۔ اساتذہ اور والدین کو ان طریقوں پر بحث کرنے کے لیے ہمیشہ خوش آمدید کہنا چاہیے جن سے بچے اپنی پڑھائی جاری رکھنے کے ساتھ آن لائن پیسہ کما سکتے ہیں۔ ایسی مختلف سائٹیں ہیں جو کسی کو بھی بطور فنکار کچھ حقیقی رقم کمانے کا موقع فراہم کرتی ہیں چاہے اس کی ڈرائنگ ہو یا پینٹنگز، یا کوئی اور دستکاری۔

NewzFlex.Official

موجودہ دور میں انگریزی زبان کو بہت پذیرآئی حاصل ہوئی ہے۔ دنیا میں ۹۰ فیصد ویب سائٹس پر انگریزی زبان میں معلومات فراہم کی جاتی ہیں۔ لیکن پاکستان میں ۸۰سے ۹۰ فیصد لوگ ایسے ہیں. جن کو انگریزی زبان نہ تو پڑھنی آتی ہے۔ اور نہ ہی وہ انگریزی زبان کو سمجھ سکتے ہیں۔ لہذا، زیادہ تر صارفین ایسی ویب سائیٹس سے علم حاصل کرنے سے قاصر ہیں۔ اس لیے ہم نے اپنے زائرین کی آسانی کے لیے انگریزی اور اردو دونوں میں مواد شائع کرنے کا فیصلہ کیا ہے ۔ جس سے ہمارےپاکستانی لوگ نہ صرف خبریں بآسانی پڑھ سکیں گے۔ بلکہ یہاں پر موجود مختلف کھیلوں اور تفریحوں پر مبنی مواد سے بھی فائدہ اٹھا سکیں گے۔ نیوز فلیکس پر بہترین رائٹرز اپنی سروسز فراہم کرتے ہیں۔ جن کا مقصد اپنے ملک کے نوجوانوں کی صلاحیتوں اور مہارتوں میں اضافہ کرنا ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button
نوٹ: اگر آپ اپنی پروڈکٹس،سروسز یا آفرزکا مفت اشتہار لگوانا چاہتے ہیں تو نیوزفلیکس ٹیم، عوام تک آپ کا پیغام پہنچانےکا موقع فراہم کر رہی ہے. شکریہ_ اپنا پیغام یہاں لکھیں
error: Content is protected !!

Adblocker Detected

Note: Turn Off the AdBlocker For this Site