156 views 0 secs 0 comments

پاکستان کے سات پوشیدہ عجائبات

In فیچرڈ
February 04, 2023
پاکستان کے سات پوشیدہ عجائبات

پاکستان قدرتی خزانوں سے مالا مال ملک ہے۔ دنیا کے سات عجائبات کی طرح ہمارے پاس بھی پاکستان کے کچھ پوشیدہ عجائبات موجود ہیں۔ پاکستان کو بہت سے دلکش عجائبات سے نوازا گیا ہے جن کی تلاش کی جانی چاہیے۔ یہ وہ جگہیں ہیں جن کا شاید آپ نے ابھی تک دورہ نہیں کیا ہوگا۔ لیکن اچھی بات یہ ہے کہ آپ یہاں ان عجائبات کے بارے میں مزید دریافت کر سکتے ہیں!

نمبر1. پرنسس آف ہوپ

امید کی شہزادی پاکستان کا قدرتی ورثہ مکران کوسٹل ہائی وے کے پہاڑی سلسلے میں واقع چٹانوں کے خوبصورت مجسموں میں سے ایک ہے۔ یہ ہنگول نیشنل پارک میں پایا جاتا ہے جو شاید پاکستان کا سب سے بڑا نیشنل پارک ہے اور کراچی سے 190 کلومیٹر دور ہے۔ اسے’پرنسس آف ہوپ‘ کا نام ہالی ووڈ اداکارہ انجلینا جولی نے دیا تھا، جب انہوں نے 2002 میں اس علاقے کا دورہ کیا تھا۔ امید کی شہزادی ایک تنہا مجسمہ ہے جو وہاں شاہی لباس اور ہڈ میں کھڑی ہے۔

نمبر2. سات پہاڑیوں کا جزیرہ

استولا جزیرہ کو سات پہاڑیوں کا جزیرہ کہا جاتا ہے۔ یہ پاکستان کے صوبہ بلوچستان میں بحیرہ عرب کے ساتھ واقع ہے۔ یہ جزیرہ پسنی ضلع کا حصہ ہے جو گوادر کا ایک ذیلی ضلع ہے۔ پاکستان نے جون 2017 میں اس جزیرے کو پاکستان کا میرین پروٹیکٹڈ ایریا قرار دیا تھا۔ یہ مچھلی کے شکار، گہرے سمندر میں غوطہ خوری اور کیمپنگ کے لیے ایک خوبصورت جگہ ہے۔

نمبر3. ٹرانگو ٹاور گلگت بلتستان

جو لوگ قدرتی چٹانوں پر چڑھنا پسند کرتے ہیں وہ پاکستان کے قراقرم سلسلے میں گلگت بلتستان میں واقع اس جگہ کا دورہ کریں۔ اسے دنیا کی سب سے بڑی عمودی چٹان اور چڑھنے کے لیے سب سے بڑی چٹان سمجھا جاتا ہے۔ 1992 سے پہلے بہت سے لوگ اس یادگار جگہ سے واقف نہیں ہیں کیونکہ دو آسٹریلوی باشندوں نے ٹرانگو ٹاورز سے بیس جمپنگ کا عالمی ریکارڈ بنایا تھا۔ خیال کیا جاتا ہے کہ یہ ٹاور چڑھنے کے لیے سب سے مشکل چٹان ہے۔ کیا آپ میں اس ٹاور کو فتح کرنے کی ہمت ہے؟

نمبر4. آنسو جھیل کاغان وادی کے پی کے

ہمارے پاس ایک اور مسحور کن جگہ ہے جہاں بہت سے لوگوں نے دورہ کیا ہے۔ یہ جھیل پاکستان کے صوبہ کے پی کے کے مانسہرہ میں واقع ہے۔ لوگوں کی توجہ حاصل کرنے کے لیے یہ زمانوں سے موجود ہے۔ اس علاقے کے مقامی لوگوں نے اس جھیل کا نام آنسو جھیل رکھا کیونکہ یہ دور سے آنسو کی طرح نظر آتی ہے۔ یہ برف سے گھرا ہوا ہے جو اسے انسانی آنکھ کی شکل دیتا ہے۔

نمبر5. پیلیولتھک آروڑ

سندھ میں اروڑ چٹان پاکستان میں دیکھنے کے لیے سب سے پرکشش مقامات میں سے ایک ہے۔ یہ روہڑی میں چانچہ گاؤں کے قریب واقع ہے۔ اس پہاڑی کو آلچین نے 1975 میں دریافت کیا تھا۔ بہت سے ماہرین آثار قدیمہ کا خیال ہے کہ پیلیولتھک ارور ایک چونا پتھر کی چٹان ہے جو پتھر کے زمانے سے ملتی ہے۔ یہ پہاڑی فرانس کی چٹان سے بھی مشابہت رکھتی ہے۔ یہ روہڑی کی ایک مشہور پہاڑی ہے جو چونے کے پتھر کے مرتفع میں واقع ہے جسے آپ سندھ کے اگلے دورے میں ضرور دیکھیں گے۔

نمبر6. کراچی میں طوبہ مسجد

یہ مسجد 1969 میں دوبارہ تعمیر کی گئی تھی۔ طوبہ مسجد کراچی میں ڈی ایچ اے کے فیز 2 میں واقع ہے۔ یہ ایک بڑے گنبد کی ساخت کی وجہ سے مشہور ہے۔ یہ خوبصورت سفید سنگ مرمر والی مسجد دنیا کی سب سے بڑی واحد گنبد والی مسجد سمجھی جاتی ہے۔ اس کی گنبد نما شکل اور فنکارانہ ساخت اسے ایک خاص مقام بناتی ہے۔ بہت سے مقامی لوگ اس مسجد کو گول مسجد کہتے ہیں۔

نمبر7. کٹاس راج مندر

کٹاس راج مندر شاید 1500 سال پرانے ایم2 موٹر وے پر کلر کہار شہر کے قریب واقع ہیں۔ یہ پوٹھوہار سطح مرتفع، صوبہ پنجاب کے ضلع چکوال میں ہے۔ یہ پیچیدہ مندر ایک جھیل سے گھرا ہوا ہے جسے ہندوؤں کے نزدیک مقدس سمجھا جاتا ہے۔ بہت سے ہندو پنجاب سے اپنی یاترا کے لیے اس جگہ کا رخ کرتے ہیں۔

نتیجہ

ہمارا مقصد آپ کو پاکستان سے غیر دریافت شدہ حیران کن جگہوں کے بارے میں معلومات دینا ہے، تاکہ پاکستان کے لوگ ان جگہوں کی سیر کر سکیں۔ مقامی لوگ وہ جگہیں بھی تلاش کر سکتے ہیں جن پر سفر کرنا چاہیے، درحقیقت نہ صرف پاکستان کے لوگ بلکہ غیر ملکی سیاح بھی پاکستان کی حیرت انگیز خوبصورتی سے پردہ اٹھانے کے لیے یہاں آتے ہیں۔

/ Published posts: 3237

موجودہ دور میں انگریزی زبان کو بہت پذیرآئی حاصل ہوئی ہے۔ دنیا میں ۹۰ فیصد ویب سائٹس پر انگریزی زبان میں معلومات فراہم کی جاتی ہیں۔ لیکن پاکستان میں ۸۰سے ۹۰ فیصد لوگ ایسے ہیں. جن کو انگریزی زبان نہ تو پڑھنی آتی ہے۔ اور نہ ہی وہ انگریزی زبان کو سمجھ سکتے ہیں۔ لہذا، زیادہ تر صارفین ایسی ویب سائیٹس سے علم حاصل کرنے سے قاصر ہیں۔ اس لیے ہم نے اپنے زائرین کی آسانی کے لیے انگریزی اور اردو دونوں میں مواد شائع کرنے کا فیصلہ کیا ہے ۔ جس سے ہمارےپاکستانی لوگ نہ صرف خبریں بآسانی پڑھ سکیں گے۔ بلکہ یہاں پر موجود مختلف کھیلوں اور تفریحوں پر مبنی مواد سے بھی فائدہ اٹھا سکیں گے۔ نیوز فلیکس پر بہترین رائٹرز اپنی سروسز فراہم کرتے ہیں۔ جن کا مقصد اپنے ملک کے نوجوانوں کی صلاحیتوں اور مہارتوں میں اضافہ کرنا ہے۔

Twitter
Facebook
Youtube
Linkedin
Instagram