صرف آدھا گھنٹہ روزانہ پیدل چلنےکے حیرت انگیز فوائد

روزانہ صرف آدھا گھنٹہ پیدل چل کر آپ اپنی صحت کو نہ صرف بہتر بنا سکتے ہیں بلکہ اپنی مجموعی صحت کوبرقرار بھی رکھ سکتے ہیں۔ اگر ابتدا میں ، آپ کو مسلسل آدھا گھنٹہ چلنا مشکل لگے، تو آپ پندرہ ، بلکہ دس منٹوں کی واک سے صحت کی جانب اپنے اِس سفر پر گامزن ہو سکتے ہیں۔ واک سے بہترین فوائد حاصل کرنے کے لیے ، آپ یہ عمل ہر روز لازمً دوہرائیں ۔

واک کا ایک مناسب وقت مقرر کر لیں

تاہم، اپنی سہولت کے لیے آپ ہر روز ایک وقت طے کر لیں ، تاکہ آپ کو وقت کی پابندی کرنے کی بھی عادت ہو جائے۔ مگر ایسا نہیں ہے کہ آپ کو اپنے طے کردہ وقت پر کوئی ضروری کا م پڑ جائے تو آپ اُس دن واک ہی نہ کریں۔ آپ وقت اپنی سہولت کے لیے مقرر کر سکتے ہیں مگر یہ کوئی حرفِ آخر نہیں۔ دن کے کسی بھی حصے میں ، جب بھی فرصت کے لمحات میسر ہوں، آپ صحت مند زندگی کی جانب اپنے اِس سفر پر رواں دواں ہو سکتے ہیں۔

اپنی واک کو دلچسپ اور پُر لطف بنانے کا طریقہ

کسی بھی جسمانی ورزش کو دلچسپ بنانے سے آپ کو تھکاوٹ اور بوریت کا احساس کم ہوتا ہے۔ لہذا، آپ اپنے اس پیدل سفر کو دلچسپ اور پرلطف بنانے کے لیے ، اپنے کسی قریب دوست ، پڑوسی اور عزیز کو بھی اپنے ساتھ پیدل چلنے کی دعوت دے سکتے ہیں ، اور پیدل واک کے فوائد بتا کر اسے اپنے ساتھ شریکِ سفر بننے پر قائل کر سکتے ہیں۔

اپنے پڑوسی، دوست یا عزیز کو شریکِ واک ہونے کی دعوت کیسے دی جائے؟

ایسا کرنے کا بہترین طریقہ یہ ہے کہ آپ اِس آرٹیکل کو اس کے ساتھ شیئر کر دیں ۔ اس کا فائد ہ یہ ہوگا کہ آپ کو اسے اپنی بات سمجھانے میں زیادہ لمبی چوڑی تقریر یا وضاحت نہیں کرنا پڑے گی۔

واک کا یہ مشورہ کن لوگوں کے لیے نہیں ہے؟

پیدل واک کا یہ مشورہ ان لوگوں کے لیے نہیں ہے جن کو کوئی موذی مرض ہے۔ قلب اور نظام تنفس کے مریض تیس منٹ واک کے اِس منصوبے پر اپنے ڈاکٹر یا طبی معالج کے مشورے کے بعد عمل کریں۔ وہ لوگ جن کی عمرچالیس سال سے زیادہ ہے، اور ان کو کسی قسم کی جسمانی ورزش کیے ہوئے کافی عرصہ ہو چکا ہے، وہ بھی اپنے معالج کے مشورے کے بعد یا مشورے کے مطابق اِس تجویز پر عمل کر سکتے ہیں۔

خلاصہ

بحرحال، تحقیق سے یہ بات ثابت ہے کہ صرف آدھا گھنٹہ پیدل چلنے سے آپ کی مجموعی صحت ، آپ کے جسم ، آپ کے دماغ اور آپ مزاج پر خوشگوار عملی نتائج واقع ہوتے ہیں جس کی آج کل ہر کسی کو ضرورت ہے۔ فارمی مرغی کھا کھا کر لوگ فارمی مرغوں کی طرح سست ہوتے جا رہے ہیں، اپنی جگہ سے ہلنے کو دل نہیں کرتا۔ اس مشورے پر عمل کریں اور ایک سرگرم، متحرک اور فعال زندگی گذارنے کا ثبوت دیں۔

ایم اے ڈبلیو (محمد علی وڑائچ)

کیٹاگری میں : صحت

اپنا تبصرہ بھیجیں