HEALTH & MEDICAL

پیشاب روکنے کے خطرناک نتائج (یہ غلطی ساری زندگی نہ کریں)

انسانی زندگی میں کچھ اہم چیزیں ہیں ، جو اگر وقت پر ہوجائیں تو ، چیزیں ٹھیک رہتی ہیں اور پریشانی سے بچ سکتے ہیں۔

اس طرح کے معاملات میں پیشاب شامل ہوتا ہے ، جو پیشاب کرنے کے لئے کسی شخص کے دماغ کے اشارے کے عین وقت پر ہونا چاہئے۔ تاہم ، بعض اوقات لوگ پیشاب کرنے یا روک تھام کرنے کے لئے محفوظ اور مناسب جگہ کی عدم دستیابی کی وجہ سے طویل عرصے سے پیشاب کرنا چھوڑ دیتے ہیں۔

اگرچہ پیشاب کرنے کے لئے ایک صاف اور محفوظ جگہ بیماریوں اور انفیکشن سے بچتی ہے ، لیکن تعصب کی وجہ سے پیشاب روکنا ایک بہت ہی نقصان دہ عمل ہے۔ ماہرین کے مطابق پیشاب کی بے قابوگی نہ صرف انسانی جسم میں بہت سی پیچیدہ تبدیلیوں کا سبب بنتی ہے بلکہ صحت کی بہت سی سنگین پریشانیوں کا بھی سبب بنتی ہے۔

ماہرین کا کہنا ہے پیشاب کو زیادہ دیر روکے رکھنے سے معدہ میں بہت خطرناک گیسیں پیدا ہو جاتی ہیں جس سے کافی بیماریاں پیدا ہوجاتی ہیں۔

پیشاب کی بے ربطی عام طور پر پیٹ ، جگر اور گردوں کو متاثر کرتی ہے۔ اور یہ عمل بھی مثانے کو فوری طور پر متاثر کرتا ہے اور اس کے کمزور ہونے کے امکانات بڑھاتا ہے۔ ماہرین صحت کے مطابق ، پیشاب کی برقراری عام طور پر مثانے کے باہر کے پٹھوں کو کمزور کردیتی ہے ، اس کے بعد پیشاب کی تھوڑی تھوڑی مقدار نکلنا شروع ہوجاتی ہے اور اس سے گردے اور جسم کے دوسرے داخلی اعضاء بشمول معدہ وغیرہ متاثر ہوتا ہے۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ اگرچہ پیشاب کی بے قاعدگی سے اس طرح کے مسائل پیدا ہونے کا امکان نہیں ہے ، لیکن اگر اس کا رجحان برقرار رکھا جائےاور بیت الخلا میں جانے میں تاخیر کو معمول بنا لیا جائے تو اس کے نتائج بہت ہی سخت ہو سکتے ہیں۔ زیادہ دیر سے ٹوائلٹ میں جاتے وقت قبض ہوسکتی ہے ، پیشاب کی وجہ سے انسانی جسم میں تبدیلیاں بھی کمزوری کا سبب بن سکتی ہیں۔

اس طریقہ کار سے کسی کے پیٹ میں درد ، مثانے اور گردوں کے گرد درد ، پیٹ میں جلن ، اور بعض اوقات گردے کی خرابی کا خطرہ بڑھ جاتا ہے۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ پیشاب کے زیادہ دیر روکے رکھنے سے انسانوں میں پیشاب بھی کم ہو جاتا ہے ، جو بڑی بیماری کا سبب بن سکتا ہے ، لہذا بروقت پیشاب سمیت زیادہ سے زیادہ پانی استعمال کریں۔ جس سے آپ پیشاب کی خطرناک بیماریوں سے بچ سکیں۔

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published.

Back to top button
error: Content is protected !!