تاریخ

  • The History of Social Media

    سوشل میڈیا کی تاریخ ٹویٹر، فیس بک اور انسٹاگرام اس صدی کے چند مشہور سوشل میڈیا پلیٹ فارمز ہیں، جن میں فیس بک سرفہرست ہے۔ سوشل میڈیا کے عروج کے بعد سے اربوں لوگ اسے استعمال کر رہے ہیں۔ جب تک سیل فون، ٹیبلیٹ، کمپیوٹر اور انٹرنیٹ کنکشن موجود ہے، لوگ سوشل میڈیا کے ذریعے کسی بھی جگہ سے دوسرے لوگوں سے باآسانی جڑ سکتے ہیں۔ کچھ کے پاس ایک سوشل میڈیا پلیٹ فارم پر متعدد اکاؤنٹس رجسٹرڈ بھی ہو سکتے ہیں۔ لیکن کیا آپ نے کبھی سوچا ہے کہ یہ سب کیسے شروع ہوا؟ بانی کون تھا؟ یہ کیسے تیار ہوا ہے؟ آئیے جانتے ہیں۔ بیسویں صدی اور سوشل میڈیا کا پیش خیمہ یوزنیٹ اور اس کی تاریخ ٹام…

    Read More
  • پیر چناسی آزاد کشمیر

    اسلام وعلیکم دوستو امید کرتا ہوں آپ سب خیریت سے ہونگے ۔دوستو ویسے تو پورا پاکستان ہی جنت ہے پاکستان کی خوبصورتی کے بارے میں جتنا لکھا جائے کم ہے لیکن پاکستان کے آزاد کشمیر کی اگر بات کی جائے بہت کچھ ملتا لکھنے کو، دیکھنے کو. وہاں کے لوگوں سے جو پیار محبت و خلوص ملتا اسکی مثال نہیں۔اور اگر آزاد کشمیر کے دارالخلافہ مظفرآباد کی بات کرے تو آپ کو بتاؤں کہ وہاں کے بہت مہمان نواز، پیار محبت و خلوص دینے والے ہیں۔ مظفرآباد کی خوبصورتی اپنی مثال آپ ہے۔ وہاں کا موسم بہت ہی پیارا اور خوشگوار ہوتا ہے۔ مظفرآباد میں دریائے جہلم اور دریائے نیلم آکر دونوں مل جاتے ہیں سب سے زیادہ دلکش نظارہ…

    Read More
  • لائٹ بلب

    لائٹ بلب ٹامس ایلوا ایڈیسن کے متعلق کئی کہانیاں سنائی جاتی ہیں ۔ اسے آج تک کی انسانی تاریخ کا عظیم ترین موجد قرار دیا جا تا ہے ۔ الجھے بالوں ،سلوٹ زدہ کپڑوں اور تھکے ماندے چہرے والا ایڈیسن ہر وقت کام میں کھو یار ہتا۔ وہ کبھی کبھار کچھ درشتی اور تکبر کا رویہ بھی اختیار کرتا ۔ مثلا ایک مرتبہ اسے تھوکنے کے لیے اگال دان پیش کیا گیا تو اس نے کہا کہ وہ فرش پر تھوکنا زیادہ پسند کرتا ہے کیونکہ وہ ہرکہیں اور ہر وقت پاس ہوتا ہے ۔ ایک اور کہانی یہ ہے کہ اس نے “انکینڈیسینٹ” لائٹ بلب ایجاد کیا تھا۔ ایڈیسن سے پہلے بھی کئی لوگ یہ ایجاد کر چکے تھے…

    Read More
  • Wheel

    پہیہ آپ اپنے گھر میں نظر دوڑائیں اور کسی ایسی چیز کو ڈھونڈنے کی کوشش کریں جس کا پہیے کے ساتھ تعلق نہ ہو۔ تقریبا ہرمشین ، ہرآلے ، انسان کی بنائی ہوئی ہر چیز کا پہیے سے کسی نہ کسی طرح تعلق ضرور ہے پہیے کی ایجاد کے دور اور مقام کے بارے میں بہت سے اندازے لگائے گئے ۔ غالب خیال یہی ہے کہ پہیے کا آغازلڑھکتے ہوئے درخت کے تنے سے ہوا ۔ شاید تنے کے کراس سیکشن کے نتیجہ میں کافی بھاری پہیہ وجود میں آیا۔ بھاری اشیاء کو ایک سے دوسری جگہ لےجانے کے لیے سلیج پہلے سے زیر استعمال تھے ۔ سلیج بنانے کے لیے دوتنوں کے اوپر ایک فریم لگا کر اسے ایک…

    Read More
  • پاکستان نرغے میں؟

    ◼️زاہــــد خـــــان آف جتوئی کہتے ہیں کہ اچھا ہمسایہ بھی خدا کی نعمت ہوتا ہے، مگر پاکستان اس نعمت سے ہمیشہ محروم رہا ہے، جہاں ایک طرف ہمارا ازلی دشمن بھارت ہے تو دوسری جانب ہمارے کلمہ گو برادر ممالک افغانستان و ایران ہیں، جنکی سر زمین دانستہ یا غیر دانستہ طور پر دشمنوں کے ہاتھوں وطنِ عزیز کیخلاف ہمیشہ استعمال ہوتی آ رہی ہے، کلبھوشن یادیو کا پکڑا جانا اسکا واضح ثبوت ہے، ان دنوں جہاں ساری دنیا کرونا سے نبردآزما ہے، وہیں مملکت پاکستان کی سیاسی و عسکری قیادت بھی مملکت کو اس وبا سے چھٹکارا دلانے کیلئے میدانِ عمل میں ہے، اس سلسلے میں ہماری مسلح افواج کے جوان ملک کے طول و عرض میں پھیلے ہوئے…

    Read More
  • Hyderabad Fort: The door of this centuries-old sign collapsed during repairs

    سندھ کے سابق دارالحکومت حیدرآباد کی نشانی پکا قلعہ کا مرکزی گیٹ منہدم ہوگیا ہے۔ محکمہ آثار قدیمہ کا کہنا ہے کہ یہ واقعہ دوران مرمت پیش آیا ہے اور تحقیقات میں معلوم کیا جائے گا کہ آیا یہ کسی کی غفلت کا نتیجہ تھا یا حادثہ۔سندھ کے دوسرے بڑے شہر حیدرآباد کا پکا قلعہ (جسے سندھی میں پکو قلعو کہتے ہیں) وسطی شہر میں موجود ہے جس کے سامنے یہاں کا قدیم بازار کئی کلومیٹر تک پھیلا ہوا ہے۔ اسے 18ویں صدی میں اس وقت تعمیر کیا گیا جب یہ شہر اس نام سے وجود میں آیا تھا۔موجودہ دور میں ریلوے سٹیشن کے قریب واقع اس قلعے کے اندر مکانات اور باہر دیوار کے ساتھ ساتھ دکانیں بنی ہوئی…

    Read More
  • نیا سال اور نیا عزم

    نیا سال اور نیا عزم

    تحریر: لعل ڈنو شنبانی انسان وقت کے ہاتھوں کچھ اس طرح گرفتار ہے کہ معلوم ہی نہیں پڑتا کہ ہر لمحہ کیسے ماضی کا حصہ بنتا جا رہا ہے۔ کتنے سال بیت گئے مگر پھر بھی ایسے ہی معلوم ہوتا ہے کہ ابھی کل کی بات ہے۔دن ہفتوں میں ،ہفتے مہینوں میں اور مہینے سال میں کیسے تبدیل ہوتے گئے پر ہمیں تو وقت گذرنے کا احساس ہی نہیں ہوا،کل سال دوہزار اکیس کے جنوری کا پہلا ہفتہ تھا تو آج ہم سال دوہزار اکیس کے دسمبر کے آخری عشرے میں داخل ہونے کو ہیں۔ وقت کا پہیہ بڑی تیزی کے ساتھ گھوم رہا ہے۔ جانے والا سال تو چلا جاتا ہے مگر کچھ یادیں سمٹ کر رخصت ہوتا ہے…

    Read More
  • آر ایس ایس کا تاریخی پس منظر (زوہیب احمد)

    بر صغیر پاک و ہند کی آزادی سے قبل حکومت برطانیہ اپنی حکومت کی مضبوطی اور استحکام کیلئے مختلف کام کرتی رہی تھی۔ اس میں کبھی اس کا جھکاؤ ہندوؤں کی طرف ہوتا اور کبھی مسلمان کی طرف۔ برطانیہ نے 1909ء میں دستوری اصلاحات کے ذریعے چند کونسل ممبر کے الیکشن کی اجازت دی تھی۔ ان اصلاحات میں مسلمانوں کیلئے الگ نمائندگی کی بات رکھی گئی اور کانگریس نے اس کی کلی مخالفت کی تھی۔ بیسویں صدی کے آغاز میں واضح جھکاؤ رکھنے والے دو اہم لیڈر کانگریس میں تھے، مہاراشٹر میں بال گنگادھر تلک اور بنگال میں آر ہندو گھوش۔ لیکن انہوں نے کانگریس میں یا اس سے باہر کوئی ہندو تنظیم قائم نہیں کی بلکہ کانگریس میں انتہا…

    Read More
  • ہماری کائنات

    ہماری کائنات

    آرٹیکل: ہماری کائنات ازقلم: عرفان حیدر ہماری کائنات بے انتہا بڑی ہے۔ اس میں ستارے بھی ہیں اور کہکشائیں بھی، بلکہ ہماری کہکشاں یعنی ملکی وے، میں زمین جیسے سیارے بھی عربوں کی تعداد میں ہو سکتے ہیں ۔ ہم زمین کے اوپر رہتے ہیں جو کہ ایک سیارہ ہے، جو سورج کے گرد گھومتی ہے،اور سورج ایک ستارہ ہے جو ہماری کہکشاں کا ایک حصہ ہے۔ جدید تحقیقات بتاتی ہیں کہ ہماری کائنات میں تقریباً 2000 ارب کہکشائیں موجود ہیں، اور ہر کہکشاں میں 400 ارب یا اس سے بھی زیادہ ستارے موجود ہیں۔ درجنوں کہکشائیں مل کر ایک لوکل گروپ بناتی ہیں۔ ہمارے لوکل گروپ میں 54 کہشائیں موجود ہیں۔ ایسے ہی کئی لوکل گروپس مل کر کلسٹر…

    Read More
  • Quaid-e-Azam’s 1924 Rolls Royce goes on display

    ہیریٹیج کلب آف موٹرنگ پاکستان نے کراچی (ایچ سی ایم پی) کے فریئر ہال میں نادر اور قدیم گاڑیوں کی نمائش کی۔کراچی میٹروپولیٹن کارپوریشن کے تعاون سے منعقد ہونے والی ایک دن تک چلنے والی سالانہ تقریب میں 100 سے زائد قدیم اور غیر معمولی گاڑیاں (کے ایم سی) پیش کی گئیں۔ قائداعظم محمد علی جناح کو 1924 ماڈل کی رولز رائس آٹوموبائل بھی نمائش میں تھی۔یہ گاڑی اس وقت نواب آف بہاولپور کی تھی، اور اسے قائداعظم محمد علی جناح اور لارڈ ماؤنٹ بیٹن نے سندھ اسمبلی کے حوالے کرنے کی تقریب اور گورنر جنرل کے افتتاح کے لیے استعمال کیا تھا۔ کار کے موجودہ مالک کریم چاپرا کا کہنا ہے کہ انہوں نے اسے 2004 میں نواب آف…

    Read More
Back to top button