BUSINESS

Financial Sector

مالیاتی شعبہ

Financial Sector

What Is the Financial Sector?
The financial sector is a section of the economy made of firms and institutions that provide financial services to commercial and retail customers. This sector comprises a broad range of industries including banks, investment companies, insurance companies, and real estate firms.

KEY POINTS

  • The financial sector is a section of the economy made of firms and institutions that provide financial services to commercial and retail customers.
  • A strong financial sector is a sign of a healthy economy.
  • The financial sector generates an honest portion of its revenue from loans and mortgages and thrives in a very low-interest-rate environment.
  • The sector is comprised of many different industries including banks, investment companies, insurance companies, and real estate firms.

Understanding the Financial Sector
A large portion of this sector generates revenue from mortgages and loans, which gain value as interest rates drop. The health of the economy depends, in large part, on the strength of its financial sector. The stronger it’s, the healthier the economy. A weak financial sector typically means the economy is weakening.

Many people equate the financial sector with Wall Street and therefore the exchanges that treat it. But there’s far more to that than that. The financial sector is one of the foremost important parts of the many developed economies. It’s made from brokers, financial institutions, and money markets—all of which offer the services needed to assist keep Main Street functioning on a daily basis.

In order for an economy to stay stable, it must have a healthy financial sector. This sector advances loans for businesses so that they can expand, grants mortgages to homeowners, and issues insurance policies to shield people, companies, and their assets. It also helps build up savings for retirement and employs variant people.

The financial sector generates an honest portion of its revenue from loans and mortgages. These gain value in an environment where interest rates drop. When rates are low, the economic conditions open up the doors for more capital projects and investments. When this happens, the financial sector benefits, meaning more economic processes.

Financial Sector Makeup
As mentioned above, the financial sector is created of many alternative industries starting from banks, investment houses, insurance companies, property brokers, consumer finance companies, mortgage lenders, and assets investment trusts (REITs).

The financial sector is one of the biggest portions of the S&P 500. the most important companies within the financial sector are a number of the foremost recognizable banking institutions within the world, including the following:

  • JPMorgan Chase (JPM)
  • Wells Fargo (WFC)
  • Bank of America (BAC)
  • Citigroup (C)

While these large companies dominate the arena, there are other, smaller companies that participate within the sector further. Insurers also are a serious industry within the financial sector, being made of such companies as American International Group (AIG) and Chubb (CB).

Investing in the Financial Sector
Economists often tie the health of the economy with the health of the financial sector. If financial companies are weak, this can be a detriment to the common consumer. Financial companies provide loans for businesses, mortgages to homeowners, and insurance to consumers. If these activities are restricted, it stunts growth in both small businesses and property.

Financial stocks are highly regarded investments to possess within a portfolio. Most companies within the world issue dividends and are judged on the strength of their financial health. During the financial crisis of 2007-2008, the financial sector was one of the hardest hit, with companies like Lehman Brothers filing for bankruptcy. After an influx of state regulation and restructuring, the financial sector is considerably stronger.

Financial ETFs, like the Financial Select Sector SPDR Fund (XLF)—the largest financial ETF—can provide investors with broad exposure to the arena.

As of the close of trading on Sept. 29, 2020, the financial sector had a combined market capitalization of $5.59 trillion.1 the arena has underperformed the S&P 500 index within the trailing 12 months (TTM), where the S&P 500 is up 14.3% while the S&P 500 Financials Sector has fallen 13.7%.

Special Considerations
Some of the positive factors that affect the financial sector include:

  1. Moderately rising interest rates. As rates rise, financial services companies can earn more on the money they need and on credit they issue to their customers.
  2. Reducing regulation. Whenever the govt. decides to chop back on the procedure, members of the financial sector will benefit. this implies it could lessen the burden while increasing profits.
  3. Lower consumer debt levels. as consumers decrease their debt loads, they lessen the chance of defaults. This lighter load also means they’ll have a tolerance for more debt, further increasing profitability.

Conversely, investors should consider a number of the negative factors that affect this sector as well:

  1. Rapid charge per unit increases. If rates rise too quickly, demand for credit like mortgages could drop, which could negatively affect certain parts of the financial sector.
  2. Yield curve flattening. If the spread between long- and short-term interest rates drops too far, the financial sector could start to struggle.
  3. More legislation. Government regulation can have an enormous impact on the financial sector. While it should help protect consumers, more bureaucratic procedure can hamper a business that operates in financial services.

مالیاتی شعبہ

مالیاتی شعبہ معیشت کا وہ حصہ ہے جو فرموں اور اداروں سے بنا ہے جو تجارتی اور خوردہ صارفین کو مالیاتی خدمات فراہم کرتے ہیں۔ یہ شعبہ صنعتوں کی ایک وسیع رینج پر مشتمل ہے جس میں بینک، سرمایہ کاری کمپنیاں، انشورنس کمپنیاں، اور رئیل اسٹیٹ فرم شامل ہیں۔

اہم نکات
نمبر1:مالیاتی شعبہ معیشت کا وہ حصہ ہے جو فرموں اور اداروں سے بنا ہے جو تجارتی اور خوردہ صارفین کو مالیاتی خدمات فراہم کرتے ہیں۔
نمبر2:ایک مضبوط مالیاتی شعبہ صحت مند معیشت کی علامت ہے۔
نمبر3:مالیاتی شعبہ اپنی آمدنی کا ایک اچھا حصہ قرضوں اور رہن سے حاصل کرتا ہے اور کم شرح سود والے ماحول میں ترقی کرتا ہے۔
نمبر4:یہ شعبہ بہت سی مختلف صنعتوں پر مشتمل ہے جن میں بینک، سرمایہ کاری کمپنیاں، انشورنس کمپنیاں، اور رئیل اسٹیٹ فرم شامل ہیں۔

مالیاتی شعبے کو سمجھنا
اس شعبے کا ایک بڑا حصہ رہن اور قرضوں سے آمدنی پیدا کرتا ہے، جو شرح سود میں کمی کے ساتھ قدر حاصل کرتا ہے۔ معیشت کی صحت کا انحصار بڑے پیمانے پر اس کے مالیاتی شعبے کی طاقت پر ہوتا ہے۔ یہ جتنا مضبوط ہوگا، معیشت اتنی ہی صحت مند ہوگی۔ کمزور مالیاتی شعبے کا عام طور پر مطلب ہے کہ معیشت کمزور ہو رہی ہے۔

بہت سے لوگ مالیاتی شعبے کو وال سٹریٹ اور اس پر کام کرنے والے تبادلے سے تشبیہ دیتے ہیں۔ لیکن اس کے علاوہ بھی بہت کچھ ہے۔ مالیاتی شعبہ بہت سی ترقی یافتہ معیشتوں کے اہم ترین حصوں میں سے ایک ہے۔ یہ بروکرز، مالیاتی اداروں، اور کرنسی مارکیٹس پر مشتمل ہے — یہ سبھی مین اسٹریٹ کو روزانہ کام کرنے میں مدد کے لیے درکار خدمات فراہم کرتے ہیں۔

معیشت کو مستحکم رکھنے کے لیے اسے صحت مند مالیاتی شعبے کی ضرورت ہے۔ یہ شعبہ کاروبار کے لیے قرضوں کو آگے بڑھاتا ہے تاکہ وہ توسیع کر سکیں، گھر کے مالکان کو رہن فراہم کر سکیں، اور لوگوں، کمپنیوں اور ان کے اثاثوں کی حفاظت کے لیے انشورنس پالیسیاں جاری کریں۔ یہ ریٹائرمنٹ کے لیے بچت بڑھانے میں بھی مدد کرتا ہے اور لاکھوں لوگوں کو ملازمت دیتا ہے۔مالیاتی شعبہ اپنی آمدنی کا ایک اچھا حصہ قرضوں اور رہن سے حاصل کرتا ہے۔ یہ ایسے ماحول میں قدر حاصل کرتے ہیں جہاں شرح سود گر جاتی ہے۔ جب شرحیں کم ہوتی ہیں، تو معاشی حالات مزید سرمایہ کاری اور سرمایہ کاری کے دروازے کھول دیتے ہیں۔ جب ایسا ہوتا ہے تو، مالیاتی شعبے کو فائدہ ہوتا ہے، یعنی زیادہ اقتصادی ترقی۔

فنانشل سیکٹر میک اپ
جیسا کہ اوپر ذکر کیا گیا ہے، مالیاتی شعبہ بہت سی مختلف صنعتوں پر مشتمل ہے جن میں بینک، سرمایہ کاری کے گھر، انشورنس کمپنیاں، رئیل اسٹیٹ بروکرز، کنزیومر فنانس کمپنیاں، رہن قرض دہندگان، اور ریئل اسٹیٹ انویسٹمنٹ ٹرسٹ (آر ای آئی ٹی ) شامل ہیں۔

مالیاتی شعبہ ایس انیڈ پی 500 کے سب سے بڑے حصوں میں سے ایک ہے۔ مالیاتی شعبے کے اندر سب سے بڑی کمپنیاں دنیا کے سب سے زیادہ پہچانے جانے والے بینکنگ ادارے ہیں، جن میں درج ذیل شامل ہیں:

نمبر1:جے پی ماررگن چیس (جے پی ایم)
نمبر2:ویلز فارگو (ڈبلیا ایف سی)
نمبر3:بینک آف امریکہ (بی اے سی)
نمبر4:سٹی گروپ (سی)

اگرچہ یہ بڑی کمپنیاں اس شعبے پر حاوی ہیں، دوسری چھوٹی کمپنیاں بھی ہیں جو اس شعبے میں بھی حصہ لیتی ہیں۔ بیمہ دہندگان بھی مالیاتی شعبے میں ایک بڑی صنعت ہیں، جو امریکن انٹرنیشنل گروپ (اے آئی جی) اور چب (سی بی) جیسی کمپنیوں پر مشتمل ہے۔

مالیاتی شعبے میں سرمایہ کاری
ماہرین اقتصادیات اکثر معیشت کی مجموعی صحت کو مالیاتی شعبے کی صحت سے جوڑتے ہیں۔ اگر مالیاتی کمپنیاں کمزور ہیں تو یہ اوسط صارف کے لیے نقصان دہ ہے۔ مالیاتی کمپنیاں کاروبار کے لیے قرض، گھر کے مالکان کو رہن اور صارفین کو انشورنس فراہم کرتی ہیں۔ اگر یہ سرگرمیاں محدود ہیں، تو یہ چھوٹے کاروباروں اور رئیل اسٹیٹ دونوں میں ترقی کو روکتا ہے۔

مالیاتی اسٹاک ایک پورٹ فولیو میں رکھنے کے لیے بہت مشہور سرمایہ کاری ہیں۔ سیکٹر کے اندر زیادہ تر کمپنیاں ڈیویڈنڈ جاری کرتی ہیں اور ان کی مالی صحت کی مجموعی طاقت پر فیصلہ کیا جاتا ہے۔ 2007-2008 کے مالیاتی بحران کے دوران، مالیاتی شعبہ سب سے زیادہ متاثر ہوا، جس میں لہمان برادرز جیسی کمپنیوں نے دیوالیہ ہونے کا دعویٰ کیا۔ حکومتی ضابطوں اور تنظیم نو کی آمد کے بعد، مالیاتی شعبہ کافی مضبوط ہے۔29 ستمبر 2020 کو ٹریڈنگ کے اختتام تک، مالیاتی شعبے کا مشترکہ مارکیٹ کیپٹلائزیشن $5.59 ٹریلین تھا۔ % جبکہ ایس اینڈ پی 500 فنانشل سیکٹر 13.7% گر گیا ہے۔

خصوصی تحفظات
مالیاتی شعبے کو متاثر کرنے والے کچھ مثبت عوامل میں شامل ہیں

نمبر1:شرح سود میں اعتدال سے اضافہ۔ جیسے جیسے نرخ بڑھتے ہیں، مالیاتی خدمات کی کمپنیاں اپنے پاس موجود رقم اور کریڈٹ پر اپنے صارفین کو جاری کرتی ہیں۔
نمبر2:ضابطے کو کم کرنا۔ جب بھی حکومت سرخ فیتے میں کمی کا فیصلہ کرتی ہے، مالیاتی شعبے کے ارکان کو فائدہ ہوگا۔ اس کا مطلب ہے کہ یہ منافع میں اضافہ کرتے ہوئے بوجھ کو کم کر سکتا ہے۔
نمبر3:صارفین کے قرض کی سطح کو کم کرنا۔ جیسے جیسے صارفین اپنے قرضوں کا بوجھ کم کرتے ہیں، وہ ڈیفالٹ کا خطرہ کم کرتے ہیں۔ اس ہلکے بوجھ کا مطلب یہ بھی ہے کہ ان کے پاس مزید قرض کے لیے رواداری ہو سکتی ہے، اور منافع میں مزید اضافہ ہو سکتا ہے۔اس کے برعکس، سرمایہ کاروں کو کچھ منفی عوامل پر غور کرنا چاہیے جو اس شعبے کو بھی متاثر کرتے ہیں مثلاَ

نمبر1:شرح سود میں تیزی سے اضافہ۔ اگر شرحیں بہت تیزی سے بڑھتی ہیں، تو قرض کی مانگ جیسے رہن میں کمی آسکتی ہے، جو مالیاتی شعبے کے بعض حصوں کو منفی طور پر متاثر کر سکتی ہے۔پیداوار کا منحنی چپٹا ہونا۔ اگر طویل اور قلیل مدتی شرح سود کے درمیان پھیلاؤ بہت زیادہ گر جاتا ہے تو، مالیاتی شعبہ جدوجہد کرنا شروع کر سکتا ہے۔
نمبر2:مزید قانون سازی۔ حکومتی ضابطے کا مالیاتی شعبے پر بڑا اثر پڑ سکتا ہے۔ اگرچہ اس سے صارفین کی حفاظت میں مدد مل سکتی ہے، لیکن زیادہ ریڈ ٹیپ مالیاتی خدمات میں کام کرنے والے کاروبار کو روک سکتی ہے۔

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published.

Back to top button