اسلامک

ایمان عمل ہے

حَدَّثَنَا أَحْمَدُ بْنُ يُونُسَ، وَمُوسَى بْنُ إِسْمَاعِيلَ، قَالاَ حَدَّثَنَا إِبْرَاهِيمُ بْنُ سَعْدٍ، قَالَ حَدَّثَنَا ابْنُ شِهَابٍ، عَنْ سَعِيدِ بْنِ الْمُسَيَّبِ، عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ، أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم سُئِلَ أَىُّ الْعَمَلِ أَفْضَلُ فَقَالَ ‏”‏ إِيمَانٌ بِاللَّهِ وَرَسُولِهِ ‏”‏‏.‏ قِيلَ ثُمَّ مَاذَا قَالَ ‏”‏ الْجِهَادُ فِي سَبِيلِ اللَّهِ ‏”‏‏.‏ قِيلَ ثُمَّ مَاذَا قَالَ ‏”‏ حَجٌّ مَبْرُورٌ ‏”‏‏.‏

 

ابوہریرہ رضی اللہ عنہ روایت کرتے ہیں

رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم سے پوچھا گیا کہ سب سے افضل عمل کون سا ہے؟ آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے جواب دیا کہ اللہ اور اس کے رسول (محمد) پر ایمان لانا۔

سائل نے پھر پوچھا کہ اس کے بعد (نیکی میں) کیا ہے؟آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے جواب دیا، ‘اللہ کی راہ میں جہاد (مذہبی لڑائی) میں حصہ لینا۔’ سائل نے پھر پوچھا کہ اس کے بعد (نیکی میں) کیا ہے؟ آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے جواب دیا کہ حج (مکہ میں) مبرور کرنا،

(جو اللہ تعالیٰ کی طرف سے قبول ہوتا ہے اور صرف اللہ کی رضا حاصل کرنے کی نیت سے کیا جاتا ہے نہ کہ دکھاوے کے لیے اور بغیر کسی گناہ کے ).’

حوالہ: صحیح البخاری 26
کتابی حوالہ: کتاب 2، حدیث 19
یو ایس سی-ایم ایس اے ویب (انگریزی) حوالہ: والیوم۔ 1، کتاب 2، حدیث 26
(فرسودہ نمبرنگ اسکیم)

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button
error: Content is protected !!